ملکیتی رقبہ کی خریدوفروخت بند  مخدوم رشید میں لوگوں کا محکمہ اوقاف کے خلاف احتجاج، نعرے بازی

ملکیتی رقبہ کی خریدوفروخت بند  مخدوم رشید میں لوگوں کا محکمہ اوقاف کے خلاف ...

  

 مخدوم رشید (نامہ نگار) محکمہ اوقاف اپنی ہٹ دھرمی پر قائم ہونے کے ساتھ ساتھ غریب لوگوں کے علاوہ زمینداروں کے لئے بھی وبال جان بن گیا، اہل علاقہ حشمت حسین شاہ، شہزاد خالد،رفاقت،سہیل حسین شاہ، نوید شاہ، غلام عباس شاہ، محمد طاہر، محمد زوہیب، عمران و (بقیہ نمبر13صفحہ6پر)

دیگر نے صحافیوں سے گفتگو کرتے ہوئے بتایا کہ لینڈ ریکارڈ سنٹر سے فرد ملکیت نہیں مل رہی، جس وجہ سے ہم اپنا ملکیتی رقبہ نہ فروخت کر سکتے ہیں اور نہ ہی خرید سکتے ہیں، ذرائع کے مطابق محکمہ اوقاف نے کمشنر ملتان کو درخواست پیش کی ہے کہ موضع مخدوم رشید کے ریکارڈ و دیگر معاملات کو مکمل طور پر بند کر دیا جائے، جب تک ہم نہ کہیں اس وقت تک موضع مخدوم رشید کا ریکارڈ بند رکھا جائے، اہل علاقہ کا کہنا ہے کہ محکمہ اوقاف کا عملہ نہ صرف ہمارے ساتھ زیادتی کر رہا ہے، بلکہ ہمیں جان بوجھ کر ذلیل و خوار کر رہا ہے، ہمارے ملکیتی رقبہ سے محکمہ اوقاف کا کوئی تعلق واسطہ نہ ہے، پھر بھی زبردستی اپنی بدمعاشی کر رہا ہے، اگر پابندی لگانی ہے تو جو رقبہ محکمہ اوقاف کا ہے، اس رقبہ پر مکمل طور پر پابندی لگائے، ہمارے ملکیتی رقبے پر کیوں پابندی لگائی گئی ہے؟کیا ہم پاکستانی شہری نہیں ہیں؟، ایسا بد سلوکی کا مظاہرہ تو دشمن ممالک میں بھی پاکستانیوں کے ساتھ نہیں ہوتا جو اپنے ہی ملک میں اپنے ہی باعزت شہریوں کے ساتھ کیا جا رہا ہے، باوثوق ذرائع سے معلوم ہوا ہے کہ ان تمام رکاوٹوں کی وجہ محکمہ اوقاف کا مخدوم محمد جاوید ہاشمی سے تنازعہ رقبہ ہے، جبکہ مخدوم محمد جاوید ہاشمی متعدد بار واضح کر چکے ہیں کہ محکمہ اوقاف کا ایک مرلہ بھی ان کے پاس نہیں ہے،اس کے باوجود اسی سلسلہ میں گزشتہ دنوں بہانہ بنا کر مخدوم محمد جاوید ہاشمی کا میرج ہال اور کنٹرول شیڈ مسمار کئے گئے تھے، اہل علاقہ و سماجی حلقوں نے گہری تشویش کا اظہار کرتے ہوئے وزیر اعظم پاکستان اور وزیر اعلی پنجاب سے مطالبہ کیا ہے کہ ملکیتی رقبہ سے یہ پابندی ختم کی جائے تاکہ ہم اپنے رقبے کی خریدو فروخت کا سلسلہ شروع کر سکیں اور غیر ذمہ داران اور ہٹ دھرمی پر قائم افسران کے خلاف حسب ضابطہ کاروائی کی جائے۔ 

نعرے بازی

مزید :

ملتان صفحہ آخر -