خوفناک حادثے، یونیورسٹی پروفیسر سمیت7افراد جاں بحق

خوفناک حادثے، یونیورسٹی پروفیسر سمیت7افراد جاں بحق

  

لیاقت پور، وہاڑی، ہارون آباد، ٹبہ سلطان پور، رحیم یارخان(بیورو رپورٹ، نمائندہ خصوصی، نامہ نگار، نمائندہ پاکستان) معروف خاندان کے تین نوجوانوں کی کار حادثہ میں ہلاکت پر لیاقت پور کی فضا سوگوار ہوگئی، پاکستان تحریک انصاف کے سابق امیدوار صوبائی اسمبلی ڈاکٹر نوید اکبر کے دو بیٹے دانیال نوید اور احمد نوید اپنے پھوپھی زاد بھائی تیمور شاہد ولد ڈاکٹر شاہد اقبال(بقیہ نمبر22صفحہ6پر)

 آئی سپیشلسٹ کے ہمراہ صبح چار بجے اپنی ٹیوٹا کرولا کار نمبر ایم این اے 171 پر سوار ہوکر لیاقت پور کے لیئے گھر سے نکلے کہ ان کی کار تیز رفتاری کے باعث صادق کینال کی حفاظتی دیوار توڑتی ہوئی نہر میں جاگری قریب موجود سکیورٹی گارڈ نے فوری طور پر ریسکیو 1122 کو اطلاع دی جس نے موقع پر پہنچ کر ریسکیو آپریشن شروع کیا دانیال نوید اور تیمور شاہد کو باہر نکالا گیا مگر وہ دم توڑ چکے تھے جب کہ احمد نوید کی نعش دس گھنٹے بعد نہر میں پانی کم کروانے کے بعد لیور پل کے قریب سے ملی، اندوہناک حادثہ کی اطلاع ملتے ہی لیاقت پور شہر اور گردونواح میں سوگ کی کیفیت طاری ہو گئی واضح رہے کہ کہ متوفی نوجوان علاقہ کی معروف سیاسی شخصیت چوہدری اکبر علی مرحوم کے پوتے اور نواسا تھے جبکہ ڈاکٹر نوید اکبر اور لیڈی ڈاکٹر امت النوید کی یہی اولاد تھی جو اب نہیں رہی ملتان روڈ ادا گڑھا موڑ کے قریب تیز رفتار بس اور مسافر کوچ میں خوفناک تصادم،حادثہ کے نتیجہ میں یونیورسٹی پروفیسر موقع پر جاں بحق،6 مسافر شدید زخمی،2 کی حالت تشویشناک،  ریسکیو نے زخمیوں کو ہسپتال منتقل کردیا ریسکیو ذرائع کے مطابق ملتان روڈ اڈا گڑھا موڑ کے قریب تیز رفتار بس اور ہائی روف میں خوفناک تصادم ہوگیا حادثہ میں بورے والا ایگریکلچر یونیورسٹی کے پروفیسر ایازب فرزند موقع پر جاں بحق ہوگئے جبکہ خواتین سمیت 6 مسافر شدید زخمی ہوئے جبکہ ہسپتال ذرائع کے مطابق 2 افراد کی حالت تشویشناک بتائی جارہی ہے  حادثہ میں بس کا فرنٹ جبکہ کوچ کا آدھے سے زیادہ حصہ مکمل طور پر تباہ ہوگیا زخمیوں کو ریسکیو ٹیموں نے آر ایچ سی ٹبہ سلطان پور منتقل کردیا جبکہ پولیس نے بھی کاروائی شروع کردی  ہارون آباد کرنٹ لگنے کے باعث نوجوان جاں بحق، تفصیلات کے مطابق18 سالہ وسیم  ہارون آباد فورٹ عباس روڈ پر الکویت پٹرول پمپ کے قریب سیڑھی نما سٹینڈ جس کوپہہے لگے ہوئے تھے اس کو دھکا لگا کر ایک جگہ سے دوسری جگہ منتقل کر رہا تھا کہ راستے میں بجلی کی مین تاریں لٹکی ہوئی تھیں ان تاروں کے ساتھ سیڑھی نما سٹینڈ ٹکرانے سے 18سالہ و سیم نامی نوجوان کو اچانک کرنٹ لگا جس کے باعث وہ موقع پر ہی جاں بحق ہوگیا۔جاں بحق ہونیوالے نوجوان وسیم کے لواحقین نے واپڈا حکام کو اس حادثے کا ذمہ دار قرار دیدیا اور اعلیٰ حکام سے انکوائری کا مطالبہ کیا ہے۔دوسری جانب واپڈا حکام کا کہنا ہے کہ یہاں پر موجود حرم سنٹر کے مالکان کو جنہوں نے یہاں پر سڑک بنائی ہوئی ہے ان کو محکمہ کی جانب سے اس حوالہ سے نوٹس دیا گیا تھا کہ جو سڑک یہاں بنائی گئی ہے یہاں مین لائن کی تاریں گزرتی ہیں اپ کے یہاں اونچی سڑک بنانے کی وجہ سے بجلی کی تاریں کافی نیچی ہیں اس کے لیے یہاں بجلی کا پول ہونا لازمی ہے اور جب تک پول نہیں لگ جاتا اس سڑک کو استعمال نہ کیا جائے حرم سنٹر مالکان کی جانب سے ڈیمانڈ نوٹس تو جمع کروا دیا گیا مگر سڑک بند نہ کی گئی جس کے باعث یہ حادثہ رونما ہوا۔ ساندہ کالونی کے رہائشی مشتاق احمدپنساری کی بیوی بیٹے کے ساتھ موٹر سائیکل پر بیٹھ کر گھر سے ٹبہ سلطان پورکی جانب آرہی تھی کہ آچانک میلسی روڈ پر چوک عاصم کے قریب پٹرول پمپ سے پٹرول ڈلواکر نکلنے والے تیزرفتار موٹر سائیکل سوار نے موٹر سائیکل کو ٹکر مادری جس کے باعث خاتون سمیت3  افراد زخمی ہوگئے خاتون کو شدید زخمی حالت میں نشتر ہسپتال ملتان منتقل کیا جارہا تھا کہ راستہ میں ہی جابحق ہوگئی جابحق ہونے والی خاتون ٹبہ سلطان پورکی معروف شخصیت مشتاق احمد پنساری کی بیوی تھی مرحومہ کی نماز جنازہ ساندہ کالونی کی مرکزی عیدگاہ میں ادا کی گئی جس میں علاقہ کی سیاسی وسماجی شخصیات،تاجروں اور عزیزاقارب صدر انجمن تاجران چوہدری طارق رشید کمبوہ، شکیل خان منیس، چوہدری حاجی شاکرکمبوہ، حاجی محمد یعقو ب کمبوہ، چوہدری مبشرحسن کمبوہ، پرویزاحمد خان، سلیم اللہ وینس، عبدالرشید پپو گجر، غلام مصطفی وینس، چوہدری نذیر احمد عطار ی گجر سمیت سینکڑوں کی تعداد میں لوگو ں نے شرکت کی مرحومہ کو نماز جنازہ کی اداگئی کے بعد مقامی قبرستان میں سپرد خاک کردیا گیا۔ٹریفک حادثے میں شدید زخمی ہونے والا 40 سالہ شخص ہسپتال میں دم توڑ گیا، تفصیل کے مطابق بستی ملوانہ کا رہائشی40 سالہ دھرامہ رام موٹر سائیکل پر سوار ہو کر جا رہا تھا کہ تیز رفتاری کے باعث سامنے سے آنے والی کار سے ٹکرا گیا اور شدید زخمی ہو گیا ورثا نے طبی امداد کیلئے شیخ زید ہسپتال منتقل کیا جہاں طبی امداد کے باوجود وہ جانبر نہ ہو پایا اور دم توڑ گیا۔

حادثات

مزید :

ملتان صفحہ آخر -