وفاقی، صوبائی بجٹ میں غربیوں کو ریلیف دیا جائے: پاکستان فورم 

وفاقی، صوبائی بجٹ میں غربیوں کو ریلیف دیا جائے: پاکستان فورم 

  

ملتان (سٹی رپورٹر)بجٹ میں عوام مفادات کو ترجیع دی جائے ملک کی 80فیصد آبادی متوسط طبقہ سے تعلق رکھتی ہے مہنگائی میں اضافہ اور آمدن میں کمی کے باعث گھروں کا معاشی سسٹم تباہ ہو کر رہ گیاہے اشیاء خورد نوش اور پٹرولیم مصنوعات کی قیمتوں میں ہونے والے آئے روز کے اضافہ نے گھروں کا سکون برباد کر دیاہے اب غریب عوام میں مزید سکت نہیں ہے کہ وہ مہنگائی کا مقابلہ کر سکے حکمرانوں کو چاہیے (بقیہ نمبر43صفحہ6پر)

کہ وہ آنے والے صوبائی و وفاقی بجٹ میں غریب عوام کو زیادہ سے زیادہ ریلیف دیں ان خیالات کا اظہار مختلف اقلیتی تنظیوں سے تعلق رکھنے والے رہنماؤں نے روزنامہ پاکستان فورم میں اظہار خیال کرتے ہوئے کیا اس موقع پر کاری طاس پاکستان کے ایگریکٹو ڈائریکٹر سیموئیل کلیمنٹ، سابق اقلیتی رکن ضلع کونسل ڈاکٹر لیاقت رشید، ہندو رہنما ء شکنتلہ دیوی، اقلیتی کونسلر آصف رشید غوری، مسیحی سماجی رہنما شوکت شفیع، ہندو رہنما ء ڈاکٹر آدو رام نے کہاہے کہ مہنگائی کی وجہ سے غریب عوام کا  جینا محال ہو چکاہے اشیاء خورد نوش کی قمیتوں میں اضافہ کے باعث غریب لوگ خودکشی پر مجبورہیں اقتدار میں آنے سے قبل غریب عوام کو سبز باغ دکھا کر ووٹ حاصل کرنے والے اقتدار کے ایوانوں میں پہنچ کر غریب عوام کو ہی بھول جاتے ہیں جبکہ 15ہزار روپے تنخواہ لینے والے غریب افراد کا بجٹ وہ لوگ بناتے ہیں جن کو آٹا، گھی، چینی کے نرخ تک معلوم نہیں ہیں انہوں نے کہاہے کہ پاکستان کا بجٹ تیاری کے مراحل میں ہے اوراگلے مہینے بجٹ کا اعلان کر دیا جائے گا خدا را آنے والے بجٹ میں غریب افراد کی آمدن، اور خرچ کو مدنظر رکھتے ہوئے بجٹ تیار کیا جائے تاکہ ان کے مسائل حل ہوں اور انہیں سکھ کا سانس مل سکے۔

گفتگو

مزید :

ملتان صفحہ آخر -