امریکی فوجی اڈوں پر تعینات فوجیوں نے غلطی سے اپنے ایٹمی ہتھیاروں کی جگہوں کے متعلق راز افشاءکر دیئے

 امریکی فوجی اڈوں پر تعینات فوجیوں نے غلطی سے اپنے ایٹمی ہتھیاروں کی جگہوں ...
 امریکی فوجی اڈوں پر تعینات فوجیوں نے غلطی سے اپنے ایٹمی ہتھیاروں کی جگہوں کے متعلق راز افشاءکر دیئے
سورس: Facebook

  

واشنگٹن(مانیٹرنگ ڈیسک) مختلف یورپی ممالک میں واقع امریکی فوجی اڈوں پر تعینات فوجیوں نے غلطی سے اپنے ایٹمی ہتھیاروں کی جگہوں کے متعلق راز افشاءکر دیئے۔

 میل آن لائن کے مطابق یہ غلطی یورپی ممالک میں موجود ان امریکی فوجی اڈوں پر تعینات فوجیوں سے ہوئی ہے جہاں امریکہ کے ایٹمی ہتھیار پڑے ہیں۔ یہ فوجی ایٹمی ہتھیاروں کے سسٹمز کی تفصیلات کو زبانی یاد کرنے کے لیے ’فلیش کارڈز‘ ایپلی کیشنز کا استعمال کرتے رہے۔ انہیں یہ احساس نہ ہو سکا کہ فلیش کارڈز میں ایسی انتہائی خفیہ معلومات موجود ہیں جو آن لائن دستیاب ہو چکی ہیں اور کوئی بھی انہیں دیکھ سکتا ہے۔ 

ان فلیش کارڈز میں یہ معلومات بھی درج ہوتی تھیں کہ کس بیس کے کون سے والٹ میں ایٹمی ہتھیار موجود ہیں اور کون ساوالٹ خالی پڑا ہے۔ ایٹمی ہتھیاروں کے علاوہ ان فوجی اڈوں پر لگے سکیورٹی کیمروں، مختلف نوعیت کے پاس ورڈز اور دیگر سکیورٹی پروسیجز کے متعلق معلومات بھی ان کارڈز پر دستیاب ہوتی تھیں۔فوجیوں کی اس غلطی سے یہ تمام معلومات انٹرنیٹ پر عام دستیاب ہو گئیں، جنہیں گوگل بھی کیا جا سکتا تھا۔ 

رپورٹ کے مطابق امریکی فوجی ان فلیش کارڈز کا زیادہ تر استعمال 2013ءتک کرتے رہے تاہم کچھ کارڈز ایسے بھی ہیں جو اپریل 2021ءکے ہیں۔جب یہ معاملہ میڈیا کی نظروں میں آیا اور امریکی فوج سے اس پر ردعمل کے لیے رابطہ کیا گیا تو اس کے بعد انٹرنیٹ سے یہ فلیش کارڈز ڈیلیٹ ہونے شروع ہو گئے اور اب مکمل طور پر ڈیلیٹ کیے جا چکے ہیں۔

مزید :

بین الاقوامی -