خاتون سمیت دو افراد بے دردی سے قتل، حادثہ، کارسوار جاں بحق 

خاتون سمیت دو افراد بے دردی سے قتل، حادثہ، کارسوار جاں بحق 

  

 ملتان،ڈیرہ،بورے والا(وقا ئع نگار،سٹی رپورٹر،تحصیل رپورٹر)نواحی(بقیہ نمبر9صفحہ6پر)

 گاوں 150/ ای بی کے رہائشی نور محمد دوکاندار کو اسی گاوں کے دوکاندار فلک شیر اعوان کا بیٹا حفیظ اللہ بھینس کی خریداری کے لئے دوکان سے بلوا کر ساتھ لے گیا اور جسے نواحی گاوں 146/ ای بی کے راجباہ پر لیجاکر وہاں پہلے سے موجود اپنے بھائی عبیداللہ اور باپ فلک شیر کے ہمراہ انتہائئ سفاکانہ طریقے سے گلا کاٹنے کے علاوہ چھریوں کے وار سے جسم چھلنی کرکے فرار ہوگئے دوکاندار نور احمد کو انتہائی تشویشناک حالت میں ٹی ایچ کیو ہسپتال بورے والا سے ابتدائی طبی امداد کے بعد ساہیوال سے لاہور ملتان کردیا گیا تھا جوکہ 9 روز تک موت و حیات کی کشمکش میں رہنے کے بعد ہسپتال میں دم توڑ گیا چوکی ڈلن بنگلہ تھانہ صدر پولیس نے مقتول کے بیٹے محمد مجید کی درخواست پر ایک مرکزی ملزم حفیظ اللہ کو گرفتار کرکے اقدام قتل کی دفعات کے تحت درج کئے گئے مقدمہ میں قتل کی دفعات شامل کرکے تفتیش کا آغاز کردیا ہے وجہ عناد یہ بتائی گئی ہے کہ مقتول اور ملزمان کی گاوں میں کریانہ کی دوکانیں ہیں اور انکے مابین کاروباری رقابت چلی آرہی تھی مدعی مقدمہ اور متاثرہ خاندان نے الزام عائد کیا ہے کہ انچارج چوکی ڈلن بنگلہ نے اپنی منشا کے مطابق ایف آئی آر درج کی ہے دیگر دونوں ملزمان سے پولیس ساز باز ہوکر انہیں بے گناہ کرنا چاہتی ہے۔وہوا کے نواحی قصبہ جلوالی کا رہائشی 30 سالہ محمد محبوب کھتران ولد محمد اسماعیل کھتران جو کہ ایک نجی پیسٹی سائڈز کمپنی میں سیلز آفیسر تھا اور اپنی ڈیوٹی کی انجام دہی کے لیے اپنی کار نمبر ABW 792 پر جلوالی سے ڈیرہ اسماعیل خان جارہا تھا کہ راستہ میں انڈس ہائی وے پر بھٹیسر کے مقام پر میرن شوگر ملز کے قریب سامنے سے آنے والی تیز رفتار مسافر ویگن نے اس کی کار کو ٹکر ماری ٹکر اس قدر شدید تھی کہ محمد محبوب کھتران موقع پر ہی جاں بحق ہوگئے جبکہ ویگن میں سوار تین مسافر بھی شدید زخمی ہوئے جنہیں فوری طور پر ٹی ایچ کیو پروآ منتقل کر دیا گیا مرحوم محمد کھتران لائن سپرنٹنڈنٹ محکمہ واپڈا محمد یعقوب کھتران کے چھوٹے بھائی تھے مرحوم تین معصوم بچیوں کا باپ تھا۔دریں اثناء ملتان سیوڑہ چوک کے رہائشی تھانہ گلگشت کی حدود میں ہفتہ قبل گھر میں شوہر شاہد حسین نے اپنی بیوی کو گھریلو ناچاقی کی وجہ سے ریحانہ بی بی کو نشہ آور گولیاں کھلا کر بے ہوش کیااور بے حوشی کی حالت میں مقتولہ ریحانہ کے گلے میں اسی کا دوپٹہ ڈال کر پنکھے سے لٹکا دیا اور شور مچانے لگا کہ میری بیوی ریحانہ نے خودکشی کر لی ہے شورمچنے پر قریبی ہمسائے کی عورت ریحانہ کے گھر آئی تو اس نے ریحانہ کو بے ہوشی کی حالت میں دیکھا اور وہ بے ہوشی کی حالت میں تھی نہ ہی بول پا رہی تھی موجود صورتحال کو دیکھتے ہوئے ریحانہ نے مقتولہ کی بڑی بہن کو فون کرکے واقعہ کے بارے اطلاع دی اسی اثنا میں پولیس بھی جائے وقوعہ پر پہنچ گئی شک کی بنیاد پر پولیس نے مقتولہ کے شوہر شاہد حسین کو گرفتار کرلیا جبکہ پولیس اصل حقائق سامنے نہیں لا رہی ہے جبکہ مقتولہ کا شوہر شاہد حسین سیاسی اثر رسوخ رکھنے کی وجہ سے بے خوف پولیس کا مہمان بنا ہوا ہے مقتولہ کے لواحقین نے تھانہ گلگشت کے خلاف ملتان پریس کلب کے باہر احتجاجی مظاہرہ کرتے ہوئے کہا کہ(آر پی او)ملتان اور سی پی او ملتان سے مقتولہ کے لواحقین نے اپیل کی ہے کہ وہ ہمیں انصاف فراہم کریں اگر ہمیں انصاف نہ ملا تو ہم سی پی او آفس کے سامنے احتجا ج کرنے پر مجبور ہو جائیں گے۔

مزید :

ملتان صفحہ آخر -