قصبہ گجرات،آپریشن،قبضہ مافیا کی دوڑیں،ایک گرفتار

قصبہ گجرات،آپریشن،قبضہ مافیا کی دوڑیں،ایک گرفتار

  

قصبہ گجرات(نمائندہ پاکستان)شہریوں کی نشاندہی پر قبضہ مافیا کے خلاف محمود کوٹ پولیس نے آپریشن شروع کردیا ایک کارندہ گرفتار کرلیاگیا۔چالیس سال (بقیہ نمبر11صفحہ6پر)

سے ڈسٹرکٹ گورنمنٹ کی طرف سے سیل کی گی کمرشل اراضی پر دکانوں کی تعمیر شروع ہوگئی۔قصبہ گجرات میں غازیگھاٹ چوک کے نزدیک ضلع کونسل مظفر گڑھ کی کمرشل اراضی موجود ہے جسے عرصہ دراز سے ڈسٹرکٹ گورنمنٹ اور ضلع کونسل کی طرف سے سیل کیا گیا تھا اور کسی بھی شخص یا ادارہ کومذکورہ پلاٹ پر تعمیر سے روک دیا گیا تھا مگر طویل عرصہ تک ضلع کونسل کی طرف سے غفلت کے باعث مقامی بااثر افراد چوہدری اللہ ڈتہ گجر چوہدری اسمائیل گجر۔ چوہدری صدیق گجر۔ چوہدری شریف گجر نے خفیہ طور پر دوکانیں تعمیر کرنا شروع کر دیں جس کی اطلاع مقامی شہریوں نے تحصیل اور ضلعی انتظامیہ کے ساتھ مقامی پولیس کو بھی دی جس پر ایس ایچ او محمود کوٹ نے بروقت نذیراے ایس آئی کی سربراہی پولیس پارٹی موقع پر روانہ کی جسے دیکھتے ہی قبضہ گروپ فرار ہوگیا موقع پر موجود لوگوں کے بیان اور قبضہ مافیا کے فرار ہونے پر شہریوں کی طرف سے ناجاز قبضہ کی اطلاع کو فوقیت ملی اور پولیس پارٹی نے کنسٹریکشن کا سامان اور موقع پر موجود ایک شخص کو تحویل میں لیتے ہوے حقاق کی چھان بین شروع کردی یاد رہے کہ ضلعی انتظامیہ کی غفلت سے قصبہ گجرات میں ضلع کونسل,ڈسٹرکٹ گورنمنٹ اور پرووینشل گورنمنٹ کی کروڑوں روپے مالیتی رقبہ جات بوگس انتقالات پر فروخت ہو چکی ہے جبکہ کھنڈر اور دیگر سرکاری رقبہ جات پر لوگ قابض ہیں جو سالانہ لاکھوں کا فادہ اٹھا رہے ہیں جبکہ حکومت کی طرف سے قصبہ گجرات کو ماڈل آل سٹی بنانے کے منصوبہ پر کام شروع ہو چکا ہے لیکن محکمہ لینڈ ریکارڈ کی طرف سے دفاتر کے لے جگہ مہیا نہ کی جارہی ہے جو کہ قصبہ گجرات کو پس ماندہ رکھنے کی انتہای گھنانی اور شرمناک حرکت ہے قصبہ گجرات کے باشعور اور طرقی پسند عوام نے محکمہ ریونیو,کمشنر ڈیرہ غازیخان اور وزیر اعلی پنجاب سے مطالبہ کیا ہے کہ قصبہ گجرات میں موجود سرکاری رقبہ جات کو فی الفور واگزار کراتے ہوے ماڈل آل سٹی کے دفاتر,تھانہ کی عمارت اور فیملی پارک بناے جایں تاکہ عوام کو صحت مند ماحول مل سکے۔

مزید :

ملتان صفحہ آخر -