سکھ یاتریوں کیساتھ ’’را‘‘ ایجنٹس آتے ہیں ، کشمیر ، خالصتان آزاد ہونگے : گوپا ل چاولہ

سکھ یاتریوں کیساتھ ’’را‘‘ ایجنٹس آتے ہیں ، کشمیر ، خالصتان آزاد ہونگے : ...

  



اسلام آباد( سٹاف رپورٹر )پاکستان گوردوارہ ایسوسی ایشن اور پنجابی سنگھ سنگت کے چےئرمین گوپال سنگھ چاولہ نے انکشاف کیا ہے کہ سکھ یاتریوں کیساتھ ’’را ‘‘کے ایجنٹس ہوتے ہیں جو کمزوریاں تلاش کرتے ہیں ۔ بھارت سے آئے سکھ یاتری آتے ہوئے ڈرے اور سہمے ہوئے ہوتے ہیں مگر یہاں کی مہمان نوازی دیکھ کر سفیر بن کر جاتے ہیں خالصتان کی تحریک دبی نہیں خالصتان بھی بنے گا اور کشمیر بھی آزاد ہوگا ۔میرے آرمی چیف جنرل قمر جاوید باجوہ سے مصافحہ کو بھارتی میڈیا بلاوجہ اچھال رہا ہے۔ بدھ کو پاکستانی نجی ٹی وی سے گفتگو کرتے ہوئے گوپال چاولہ نے کہا کہ عمران خان نے جو وعدہ کیا میں ان کا اور آرمی چیف جنرل قمر جاوید باجوہ کا شکرگزار ہوں۔ سندھو صاحب کا پاکسان آنا خوشگوار ثابت ہوا ۔دوسری طرف بھارتی ٹی وی کو انٹرویو دیتے ہوئے گوپال چاولہ نے کہا ہے کہ پاکستانی آرمی چیف ہماری جان ہیں وہ ہمارے دلوں میں رہتے ہیں،ان سے ملنے کو اپنی خوش قسمتی سمجھتے ہیں،جنرل قمر جاوید باجوہ سے ہاتھ ملایا اورجپھی بھی ڈالی اس کو غلط رنگ نہ دیں،یہ پروگرام ہم نے ہی منعقد کیا تھا،آپ اس بات کو غلط رنگ مت دیں،ہمارا حافظ سعید کے ساتھ کوئی تعلق نہیں،ہم بارڈر کھولنا چاہتے ہیں، اس وقت سدھو صاحب اور عمران خان صاحب کے بارے میں بات کرنے کی ضرورت ہے،اگر آپ کوئی منفی رنگ دینا چاہتے ہیں تو مجھ سے بات نہ کریں۔انہوں نے مزیدکہاکہ پاکستان اور انڈیا دونوں ایٹمی قوتیں ہیں اس لئے جنگ کی بات کرنا بے وقوفی ہے۔ میں آرمی چیف جنرل قمر جاوید باجوہ سے ملا ہوں وہ ہمارے اپنے آرمی چیف ہیں ، میرے ان سے مصافحہ کو میڈیا بلاوجہ اچھال رہا ہے ۔ ان سے مصافحہ میری خوش قسمتی ہے ۔ آج کل 300سے اوپر لوگ ہندوستان سے آئے ہیں مجھے یقین ہے کہ ان میں سے کم از کم 100افراد کا تعلق ہندوستانی خفیہ ایجنسی راء سے ہوگا یہ لوگ ہماری کمزوریاں ڈھونڈتے ہیں ۔ سکھ یاتری جب باہر کے ممالک سے پاکستان آتے ہیں تو ان کو ان کے میڈیا نے بہت ڈرایا ہوتا ہے لیکن بعد میں پاکستانیوں کی مہمان نوازی سے ان کے خیالات بدل جاتے ہیں۔ بھارت میں سکھوں کے حالات بہت خراب ہیں اس وقت پنجاب پورے بھارت کو 60فیصد گندم فراہم کررہا ہے ۔ بھارت کی پالیسیاں سکھوں کو دبانے کیلئے ہیں بھارت میں کسان خود کشیاں کررہے ہیں۔ سکھوں کو طاقت سے ختم نہیں کیا جاسکتا ۔ ماضی میں سکھوں کی نسل کشی کی گئی ، انہوں نے کہا کہ میری حق سچ کی بات کرنے پر بھارتی میڈیا مجھے دہشت گرد قرار دے رہا ہے۔ ہندوستان کی تقسیم سے پنجاب کا نقصان ہوا ہے ۔ ہندوستان کی حکومت اب دوبارہ پنجاب کو ملتا ہوا نہیں دیکھ سکتی ۔ خالصتان کی تحریک نہ دبی تھی اور نہ دبے گی ، انشاء اللہ کشمیر بھی آزاد ہوگا اور خالصتان بھی آزاد ہوگا۔

گوپال چاولہ

مزید : صفحہ اول


loading...