نواز شریف زرعی یونیورسٹی میں دو روزہ بین الاقوامی کانفرنس کا افتتاح سائنس دانوں کی شرکت

نواز شریف زرعی یونیورسٹی میں دو روزہ بین الاقوامی کانفرنس کا افتتاح سائنس ...

  



ملتان ( سپیشل رپورٹر) محمد نواز شریف زرعی یونیورسٹی کے شعبہ سوائل اینڈ انوائرنمٹل سائنسز کے زیر اہتمام زمین اور فصلوں کی صحت پر موسمیاتی تبدیلیوں کی وجہ سے ہونے والی تبدیلیوں(بقیہ نمبر29صفحہ12پر )

کے بارے میں آگاہی دینے کیلئے دو روزہ بین الاقوامی کانفرنس کا افتتاح کیا گیا ۔ کانفرنس کا افتتاح وفاقی وزیر مملکت برائے موسمیاتی تبدیلی میڈیم زرتاج گل اور وائس چانسلر جامعہ پروفیسر ڈاکٹر آصف علی نے کیا ۔ دو روزہ بین الاقوامی کانفرنس میں امریکہ ، چائنہ ، ملا یشیا ء ، آسٹریلیا اور ایران سے آئے ہوئے زرعی سائنسدانوں نے شرکت کی اور اپنی اپنی تحقیقات کانفرنس کے شرکاء سے شےئر کیں ۔ کانفرنس کا افتتاح کرتے ہوئے وفاقی وزیر مملکت برائے موسمیاتی تبدیلی میڈیم زرتاج گل نے کہاکہ موسمیاتی تبدیلیوں سے فصلوں کو بہت زیادہ خطرہ ہے ۔ ہمارا زمیندار خوشحال نہیں ہو گا تو ملک ترقی نہیں کر سکے گا ہماری حکومت کے منشور میں زمینداروں اورکسانوں کے مسائل حل کرنے کو ترجیح دی گئی ہے ۔ انہوں نے کہاکہ مجھے خوشی ہے کہ زرعی یونیورسٹی ملتان میں زرعی ریسرچ پر بہت کام ہو رہا ہے اور وائس چانسلر جامعہ پروفیسر ڈاکٹر آصف علی نے بہت کم وقت میں جامعہ کو ترقی کی راہ پر گامزن کر دیا ہے ۔ انہوں نے کہاکہ ہمارے ملک کو پانی کی کمی کا بہت بڑا مسئلہ درپیش ہے لیکن اس کے ساتھ ساتھ زمین میں پیداواری صلاحیت کی کمی بھی اہم مسئلہ ہے۔ یہ کانفرنس اس حوالے سے آگاہی دے رہی ہے جو کہ بہت خوش آئند ہے ۔ انہوں نے کہاکہ ہماری وزارت ہر وقت حاضر ہے جو بھی ممکن مدد درکار ہوگی وہ کی جائے گی ۔ ہمارے ملک میں زیادہ تعداد نوجوانوں کی ہے ۔ نوجوانوں کے چاہیے کہ جنوبی پنجاب کے دو رافتادہ مقامات پر تعلیم کو عام کرنے کیلئے اپنا کردار ادا کریں تاکہ ملک ترقی کی راہ پرگامزن ہو سکے ۔ وائس چانسلر جامعہ پروفیسر ڈاکٹر آصف علی نے کانفرنس سے خطاب کرتے ہوئے کہا کہ میں نے2016کو زرعی جامعہ کو جوائن کیا اورمیں نے آتے ہی اسی وقت سے شجر کاری مہم پر کام شروع کر دیا ۔ زرعی جامعہ کی جانب سے مختلف سرکاری اداروں ، پرائیوٹ اداروں اور عوام الناس کو شجر کاری مہم کو کامیاب بنانے کیلئے مفت پودے فراہم کئے ۔ انہوں نے کہاکہ ہم وزیر اعظم پاکستان کی شجر کاری مہم کو سمجھتے ہیں اور اس پر عمل پیرا ہیں ۔ انہوں نے کہاکہ ہمارا ادارہ جامعہ کے طلبہ کی تعلیم کے ساتھ ساتھ انٹر پرینیور شپ اور اعتماد پیدا کرنے پر کام کر رہا ہے تاکہ وہ نوکری لینے کی بجائے نوکریاں فراہم کرنے والے بنیں ۔ جنوبی پنجاب کے حوالے سے زرعی جا معہ بہت مثالی ہے کیونکہ یہ خطہ شعبہ زراعت کے حوالے سے مشہور ہے جبکہ جامعہ سے ملحقہ درجن بھر تحقیقی ادارے پہلے سے موجود ہیں جن کے ساتھ ملکرکسانوں کی فلاح کیلئے زرعی جامعہ مختلف پراجیکٹس پر کام کررہی ہے ۔ ہماری جامعہ ملکر اشتراک سے کام کرنے پر یقین رکھتی ہے ۔کانفرنس سے ڈاکٹر شاؤ کنگ نی (Dr. Shuo Qing Ni) ،ڈاکٹر سرگئی شابالا (Dr. Sergey Shabala)، ڈاکٹر جاوید اختر، ڈاکٹر سلیم اختر نے مختلف معدنیات سے جانوروں کی خوراک سے نقصان دہ اجزاہ کو نکالنے کا موازنہ کے موضوع پر تفصیلی پریزنٹیشن دی ۔ ڈاکٹر انوار الحسن نے مٹی کی صحت پر موسمیاتی تبدیلیوں کی وجہ سے ہونے والی تبدیلی پر پریزنٹیشن دی ۔ اس کے علاوہ ڈاکٹر آصف علی ایڈوائز اینگرو فرٹیلائز ر ، ڈاکٹر محمد یسین، چےئر مین شعبہ سوائل اینڈ انوائرنمنٹل سائنسز ڈاکٹر تنویر الحق اور ڈاکٹر شفقت نواز نے بھی کانفرنس کے پہلے روز خطاب کیا ۔کانفرنس کی سفارشات درج ذیل ہیں ۔ موسمیاتی تبدیلیوں کو مانیٹر کرنے کیلئے موسمیاتی تبدیلی ریسرچ سنٹر بنانے کی ضرورت ہے جو کہ زیادہ بہتر اور مربوط طریقے سے تحقیق کر سکے ۔ فصلوں کی کاشت کا ہیر پھیر اس طریقے سے شروع کریں جس سے زمین کے اندر نامیاتی مادہ کی مقدار بڑھے ۔علاوہ ازیں وفاقی وزیر مملک زرتاج گل نے جامعہ میں بنائے گئے ہائیڈرو پانک یونٹ کا معائنہ بھی کیا اور مسرت کا اظہار کیا ۔ اس موقع پر ممبر پنجاب اسمبلی سردار ملک جہانزیب وارن ، ڈائریکٹر کاٹن ریسرچ اسٹیشن ڈاکٹر صغیر احمد ، ڈائریکٹر سنٹرل کاٹن ریسرچ اسٹیشن ڈاکٹر زاہد ، ڈائریکٹر مینگو ریسرچ انسٹی ٹیوٹ ڈاکٹر اللہ بخش ، ڈاکٹر عرفان احمد بیگ، ڈاکٹر محمد باقر حسین ،ڈاکٹر عابد حسین، ڈاکٹر محمد عمران ، ڈاکٹر شکیل احمد ، ڈاکٹر وزیر احمد ، ڈاکٹر عثمان جمشید سمیت کسانوں ، کاشتکاروں اور طلباء و طالبات کی کثیر تعداد بھی موجود تھی۔

شرکت

مزید : ملتان صفحہ آخر