کرتار پور بارڈر کھلنا سکھوں کی تاریخ کا اہم دن ہے ،رمیش سنگھ

کرتار پور بارڈر کھلنا سکھوں کی تاریخ کا اہم دن ہے ،رمیش سنگھ

  



کراچی(اسٹاف رپورٹر)پاکستان سکھ کونسل پیٹرن انچیف سردار رمیش سنگھ نے کہا ہے کہ کرتار پور بارڈر کھولنے کے حوالے سے پاکستان کی حکومت کا فیصلہ دنیا بھر کے سکھوں کے تاریخ کا اہم ترین دن ہے، امید کرتے ہیں کہ بھارتی حکومت پاکستان کی محبت کے جذبات کاجو اب محبت سے دے گی،بھارتی وزیر خارجہ کو اس اہم موقع پر پاکستان میں موجود ہونا چاہئے تھا ان کے نہ آنے سے ہمیں افسوس ہے، ان خیالات کا اظہار انھوں نے بدھ کے روز کراچی پریس کلب میں پریس کانفرنس سے خطاب کرتے ہوئے کیا اس موقع پر سکھوذں کی جانب سے کرتار پور بارڈر کھولنے کی خوشی میں کراچی پریس کلب میں میٹھائی بھی تقسیم کی گئی۔ اس موقع پر ان کے ہمراہ سردار رام سنگھ، سردار دیپک سنگھ، سردار مومن سنگھ خالصہ، سردار کرشن سنگھ،سردار منجیت سنگھ، سردار بلوندر سنگھ،او ر دیگر موجود تھے۔ سردار رمیش سنگھ نے کہا کہ ایسے گوردوارے جو 1947سکھ دھرم سے بچھڑ گئے تھے آج کے تاریخی دن کے موقع پر ہمیں فخر محسوس ہور ہا ہے، پاکستان عوام دوست اور مہمان نواز ملک ہے اس نے ہمیشہ اقلیتوں کے ساتھ بہت اچھا سلوک روا رکھا ہے۔ انھوں نے کہا کہ اس تاریخی موقع پر بھارت سرکار نے بھی مثبت قدم اٹھا کر دنیا بھر کے سکھوں کے دل جیت لئے ہیں،ہم فخر محسوس کرتے ہیں کہ پاکستان کے آرمی چیف جنرل قمر جاوید باجوہ ، وزیر اعظم پاکستان عمران خان نے پہل کرتے ہوئے کرتار پور بارڈر کھولنے کا اعلان کیااس کے بعد پاکستان سکھ کونسل نے بھارت سرکار سے بھی کرتار پور بارڈر کھولنے کا مطالبہ کیا تھاجسے بھارت سرکار نے مان لیا۔رمیشن سنگھ نے کہا کہ گوردوارہ دربار صاحب کرتار پور نارووال دنیا بھر میں سکھ برادری کے لئے ایک تاریخی مقام کی حیثیت رکھتا ہے جہاں بابا گرونانک نے اپنی زندگی کے اٹھارہ سال گزارے او ر اسی مقام پر بابا فرید کا کلام بھی پڑھا گیا تھا۔انھوں نے کہا کہ ہم پاکستانی حکومت کے شکر گزار ہیں کہ پاکستان آئے ہوئے ساری دنیا سے ساڑھے تین ہزار سکھ یاتریوں کے لئے ہر لحاظ سے بہت اچھے انتظامات کئے گئے ہیں۔امید کرتے ہیں کہ پاکستان کی محبت کا جواب بھارت کی حکومت محبت سے دے گی، دونوں ملکوں کے عوام آپس میں دوستانہ مراسم چاہتے ہیں، انھوں نے کہا کہ ہماری حکومت پاکستان سے درخواست ہے کہ متروکہ وقف املاک بورڈ کا چیئرمین اس مرتبہ کسی سکھ کو بنایا جائے۔ اس فیصلے سے دنیا بھر سے سکھوں کی بڑی تعداد پاکستان آئے گی، اس علاوہ ہم وفاقی وزیر ریلوے شیخ رشید سے بھی درخواست کرتے ہیں کہ سکھوں کی پانچسو پچاس سالہ مذہبی تقریبا ت کے موقع پر کراچی سے کرتار صاحب کے لئے خصوصی ٹرینیں چلائی جائیں،اور کراچی میں سکھوں کو کمیونٹی سینٹر قائم کرنے اور اس کے ساتھ گوردوارہ قائم کرنے کے لئے زمین فراہم کی جائے۔

مزید : راولپنڈی صفحہ آخر