شانگلہ کی پسماند گی اولین تر جیح، ختم کر کے دم لیں گے، شوکت علی یوسفزئی

شانگلہ کی پسماند گی اولین تر جیح، ختم کر کے دم لیں گے، شوکت علی یوسفزئی

  



الپوری(ڈسٹرکٹ رپورٹر)صوبائی وزیر اطلاعات و شانگلہ سے رکن صوبائی اسمبلی شوکت یوسف زئی نے کہا ہے کہ شانگلہ کی پسماندگی کا خاتمہ اولین ترجیح ہے ، صوبائی حکومت کے تمام وسائل بروئے کار لاکر شانگلہ سے اندھیروں کا خاتمہ کیا جائیگا ، شانگلہ ایکسپریس وے سمیت بجلی منصوبوں پر سیاست چمکانے والے جلد بے نقاب ہونگے ۔ایکسپریس وے کے حوالے سے کوئی پراجیکٹ مرکزی حکومت میں موجود نہیں ، اس حوالے سے مسلسل غلط بیانی کی جارہی ہے ، مرکزی یا صوبائی حکومت میں شانگلہ کا کسی قسم کا منصوبہ ختم نہیں کیا جاسکتا ، شانگلہ کے عوام نے منتخب کرکے ایوان اقتدار تک پہنچایا ہے یہ میری ذمہ داری ہے کہ شانگلہ کی حقوق کی تحفظ کی جائے، شانگلہ میں ہسپتالوں ، سکولوں ، انفراسٹرکچر ، مواصلات کے ابتر حالات مایوس کن ہیں ، شانگلہ میں کسی بھی دور میں نمائندوں نے کام نہیں کیا ۔ ان خیالات کا اظہار شوکت یوسفزئی نے بدھ کے روز اپنے دورہ شانگلہ کے موقع پر ڈسٹرکٹ سیکرٹریٹ الپوری میں واقع اپنے دفتر میں میڈیا نمائندوں سے بات چیت کرتے ہوئے کیا۔ اس موقع پر انھوں نے ضلع بھر سے آنیوالے عوام کے مسائیل سنے اور بعض ہی پر موقع پر احکامات جاری کئے ۔ شوکت یوسف زئی نے کہا کہ شانگلہ کی محرومیوں کا ازالہ کرنا اولین ترجیحات میں شامل ہے پاکستان اس وقت شدید مالی بحران کا شکار ہے ۔ایک طرف وسائل کی کمی ہے تو دوسری طرف عوام کے مشکلات کئی زیادہ ہیں، شانگلہ یونیورسٹی سمیت دیگر تمام منصوبوں پر غور کیا جارہا ہے ، ماضی میں مرکزی حکومت نے شانگلہ میں یونیورسٹی بنانے کے بجائے صرف اپنی سیاست کیلئے یونیورسٹی کیمپس چند کمروں میں بندکرکے عوام کے انکھوں میں دھول جھونکا۔یہ شانگلہ کے عوام کے ساتھ دھوکہ تھا اب وزیر اعلیٰ کے ساتھ اس حوالے سے تمام اقدامات پر بات ہوچکی ہے ، جلد سے جلد فل فلیج یونیورسٹی کا قیام ہوگا ، ٹیکنیکل کالج کو بھی جلد سے جلد کھلا جائیگا۔؛ شوکت یوسف زئی نے کہا کہ سپیشل پولیس فورس کے حوالے سے بات چیت جاری ہے اور جلد ان کا مستقبل کا فیصلہ ہو جائیگا تا ہم اب صوبائی حکومت نے ان کی تنخواہیں دگنا کرنے کی تیاری کی ہے ۔۔

مزید : کراچی صفحہ اول