احتساب عدالت میں نواز شریف کے لئے دہی بھلے کون لے کر آیا؟

احتساب عدالت میں نواز شریف کے لئے دہی بھلے کون لے کر آیا؟
احتساب عدالت میں نواز شریف کے لئے دہی بھلے کون لے کر آیا؟

  



اسلام آباد (ویب ڈیسک) بدھ کو احتساب عدالت میں سابق وزیراعظم میاں نواز شریف کی پیشی کے موقع پر مسلم لیگ (ن) برطانیہ کے نائب صدر ناصر بٹ نے اپنے قائد کو دہی بھلے پیش کیے۔

روزنامہ نوائے وقت کے مطابق ناصر بٹ نے یہ دہی بھلے اپنے گھر میں خصوصی طور پر تیار کرائے تھے جو انہوں نے منگوا کر میاں نواز شریف کی گاڑی میں رکھ دیئے۔ سابق وزیر کیڈ ڈاکٹر طارق فضل چوہدری اور سابق رکن قومی اسمبلی ملک ابرار نے کمرہ عدالت میں موجود میاں نواز شریف اور لیگی رہنماﺅں کے لیے کافی اور کھانے کا انتظام کیا۔ انہوں نے صحافیوں سے غیررسمی گفتگو کی۔

نوازشریف نے کمرہ عدالت میں اپنے وکلا سے گفتگو کرتے ہوئے کہا کہ اتفاق فائونڈری 1950 کی دہائی میں زرعی آلات بنا رہی تھی اور ساٹھ کی دہائی میں آلات برآمد کرتی تھی، وہ گواہ موجود ہیں جنہوں نے 60کی دہائی کے آغاز میں اتفاق فائونڈری کے آلات استعمال کئے۔ 1967ءمیں والد کے کہنے پر عراق، ایران اور سعودی عرب کا دورہ کیا۔ لاہور میں پہلی امریکن شیورلے گاڑی میاں شریف نے 1962ءمیں منگوائی، جبکہ لاہور میں پہلی سپورٹس کنورٹ ایبل مرسڈیز میرے لیے منگوائی گئی تھی، بہت سے گواہ بیان قلمبند کرانے کیلئے تیار ہوجائیں گے۔

بعد ازاں نوازشریف نے عملے کو ہدایت کی کہ فہرست تیار کرکے دیں کہ اتفاق فانڈری کیا بناتی اور ایکسپورٹ کرتی تھی۔کمرہ عدالت میں موجود لیگی رہنماﺅں نے مشورہ دیا کہ اس وقت کی تمام تصویروں اور ریکارڈ کو عدالت میں پیش کیا جاسکتا ہے، اس وقت کی تصویروں اور ریکارڈ کو عدالت میں پیش کریں۔ وکیل شیر افگن اسدی نے کہا تصویروں کو عدالتی ریکارڈ پر مارک کرایا جاسکتا ہے تاہم پرویز رشید نے مخالفت کرتے ہوئے کہا کہ ہمارا عدالت میں ابھی یہ کیس ہی نہیں ہے۔ ابھی تو ہمارا کیس یہ ہے کہ یہ جائیداد ہماری ہے ہی نہیں۔ اتفاق فائونڈری کی برآمدات کی بات گپ شپ کیلئے ٹھیک ہے، زیر سماعت ریفرنسز میں ہمارا موقف مختلف ہے۔

مزید : علاقائی /اسلام آباد