جسٹس (ر) جاوید اقبال کی نیب ہیڈ کواٹرز میں کھلی کچہری ، مضاربہ اور مشارکہ سکینڈل میں 34 بڑے ملزمان گرفتار ، رقم واپسی کیلئے اقدامات اٹھا رہے ہیں : چیئرمین نیب

جسٹس (ر) جاوید اقبال کی نیب ہیڈ کواٹرز میں کھلی کچہری ، مضاربہ اور مشارکہ ...
جسٹس (ر) جاوید اقبال کی نیب ہیڈ کواٹرز میں کھلی کچہری ، مضاربہ اور مشارکہ سکینڈل میں 34 بڑے ملزمان گرفتار ، رقم واپسی کیلئے اقدامات اٹھا رہے ہیں : چیئرمین نیب

  



اسلام آباد (پ ر)چیئر مین نیب جسٹس ریٹائرڈ جاوید اقبال نے کہاہے کہ نیب مضاربہ اور مشارکہ سکینڈلز میں ہزاروں افراد کی لوٹی گئی رقم کی واپسی کیلئے سنجیدہ اقدامات اٹھا رہا ہے۔ ابتک34 بڑے ملزمان کی گرفتاری عمل میں لائی جاچکی ہے۔بدعنوانی کا خاتمہ اور عوام کی لوٹی ہوئی رقم کی واپسی نیب کی اولین ترجیح ہے۔

تفصیلات کے مطابق قومی احتساب بیورو کے چیئر مین جسٹس جاویداقبال نے کہا ہے کہ ملک سے بدعنوانی کاخاتمہ اور عوام کی لوٹی ہوئی رقم کی واپسی نیب کی اولین ترجیح ہے۔ نیب بدعنوان عناصر کے خلاف بلا تفریق احتساب کا عمل جاری رکھے گا۔ نیب نے بدعنوان عناصر سے عوام کی لوٹی ہوئی تقریباََ 297 ارب روپے کی رقم برآمد کرکے قومی خزانے میں جمع کروائی ہے۔انہوں نے کہا کہ مضاربہ اور مشارکہ سکینڈلز میں ہزاروں افراد کی لوٹی گئی رقم کی واپسی کیلئے نیب سنجیدہ اقدامات اٹھا رہا ہے اور ابتک34 بڑے ملزمان کی گرفتاری عمل میں لائی جاچکی ہے اور مقدمات معزز احتساب عدالتوںمیں زیر سماعت ہیں۔ان خیالات کا اظہار قومی احتساب بیورو کے چیئرمین جسٹس جاوید اقبال نے نیب ہیڈ کوارٹرز میں کھلی کچہری میں کیا۔

انہوں نے ملک بھرسے آئے ہوئے عوام کی بدعنوانی سے متعلق شکایات کو انتہائی توجہ اوراطمینان کے ساتھ فرداََ فرداَََ سنا اور کہاکہ نیب عوام کی بدعنوانی سے متعلق شکایات کا قانون اور شواہد کے مطابق جائزہ لے گا اوربدعنوان عناصرکو قانون کے مطابق منطقی انجام تک پہنچایا جائے گا۔ چیئر مین نیب جسٹس جاوید اقبال نے اپنے منصب کی زمہ داریا ں سنبھالنے کے بعد نیب افسران سے خطاب میں اس بات کا اعلان کیا تھا کہ وہ ہر ماہ کی آخری جمعرات کو عوام کی بدعنوانی سے متعلق شکایات بذاتِ خود نیب ہیڈ کوارٹرز میں سنیں گے۔ اس کے علاوہ چیئرمین نیب جسٹس جاوید اقبال کی ہدایت پر نیب کے تمام علاقائی دفاتر کے ڈائریکٹر جنرلز ہر ماہ کی آخری جمعرات کو عوام کی بدعنوانی سے متعلق شکایات اپنے علاقائی دفاتر میں بذاتِ خودسنتے ہیں جس کی وجہ سے نہ صرف نیب پر عوام کے اعتماد میں اضافہ ہوا ہے۔ بلکہ تمام شکایات کنندہ گان نے چئیرمین نیب جناب جسٹس جاوید اقبال کی ملک سے بدعنوانی کے خاتمے کیلئے کی جانے والی کاوشوں کو سراتے ہیں۔ نیب کے چیئرمین نے ملک سے بدعنوانی کے خاتمہ کیلئے عملی اقدامات کی بدولت گزشتہ ایک سال میں نیب کو بدعنوانی کے خاتمے کیلئے ایک معتبر ادارہ بنا دیا ہے ۔ جسکا برملا اظہار ملکی اور غیرملکی ادارے بھی اپنی رپورٹس میں کرتے ہیں۔

قومی احتساب بیورو کے چیئرمین جسٹس جاوید اقبال نے نیب کے افسران اور اہلکاروں کو ہدایت کی ہے کہ عوام کی بدعنوانی سے متعلق تمام شکایات کو کمپیوٹر ائزڈ کرنے کے علاوہ تمام شکایات کنندگان کو ان کی شکایت کی وصولی کی اطلاع کے علاوہ ان کی شکایات کو قانون کے مطابق منطقی انجام تک پہنچایا جائے اور تمام شکایات کنندہ گان کے ساتھ خوش اخلاقی سے پیش آنے کے علاوہ ان کی عزت نفس کاہمیشہ خیال رکھا جائے اس سلسلہ میں کوئی کوتائی برداشت نہیں کی جائے گی۔

مزید : قومی


loading...