حکومت نے کون سے منصوبے مکمل کرلیے اور کن پر کام جاری ہے؟ مکمل تفصیلات سامنے آگئیں

حکومت نے کون سے منصوبے مکمل کرلیے اور کن پر کام جاری ہے؟ مکمل تفصیلات سامنے ...
حکومت نے کون سے منصوبے مکمل کرلیے اور کن پر کام جاری ہے؟ مکمل تفصیلات سامنے آگئیں

  



اسلام آباد (ڈیلی پاکستان آن لائن) وفاقی حکومت کی جانب سے 100 روز کے دوران 18 منصوبے مکمل کرلیے گئے ہیں جبکہ 16 پر کام جاری ہے۔ وزیر اعظم کے مشیر شہزاد ارباب کا کہنا ہے کہ وزیر اعظم نے مئی میں پی ٹی آئی کا ایجنڈا پیش کرتے ہوئے کہا تھا کہ پہلے 100 روز میں حکومت کی سمت کا تعین کیا جائے گا ۔ جو منصوبے مکمل ہوچکے ہیں اس کا مطلب ہے کہ یہ لانچ کیلئے تیار ہیں جبکہ باقیوں پر کام جاری ہے۔

کنونشن سنٹر اسلام آباد میں حکومت کی 100 روزہ کارکردگی کے حوالے سے تقریب ہوئی تو سب سے پہلے وزیر اعظم کے مشیر شہزاد ارباب نے حکومت کے 100 روزہ ایجنڈے اور کارکردگی پر تفصیلی بریفنگ دی۔ انہوں نے بتایا کہ حکومت کی جانب سے 34 منصوبے دیے گئے تھے جن میں سے 18 مکمل ہوگئے ہیں اور 16 پر کام جاری ہے۔

انہوں نے کہا کہ جب ہم نے پہلی بار ایجنڈا دیا تو ہمارے دوستوں نے وارننگ دی کہ آپ اپنے لیے خود مشکلات کھڑی کر رہے ہیں۔ یہ تسلیم کرتا ہوں ہوں کہ وہ ٹھیک تھے لیکن ہم اپنے لیے یہی چاہتے تھے۔ ہمارے لیے ترقی کی بنیاد رکھنا اور اپنے لیے درست سمت کا انتخاب کرنا سیاسی نمبر بنانے سے زیادہ اہم ہے۔ ہمیں علم تھا کہ صحیح بنیاد خود کو مشکل میں ڈالے بغیر نہیں رکھی جاسکتی۔

 شہزاد ارباب نے کہا کہ وزیر اعظم نے جب مئی میں 100 روزہ ایجنڈا کا اعلان کر رہے تھے تو انہوں نے بتایا تھا کہ ہم پہلے 100 روز میں اپنی سمت کا تعین کریں گے۔ نہایت دیانتداری سے کہتا ہوں کہ جس رفتار سے اس حکومت نے کام کیا ہے وہ میں نے اپنی 36 سالہ ملازمت میں نہیں دیکھا۔ہم نے حکومتی کلچر تبدیل کیا کیونکہ وقت آگیا ہے کہ اس طویل سفر کی ابتدا کی جائے۔ ہفتے کے ساتوں دن کام ، باقاعدگی سے کابینہ کے ہفتہ وار اجلاس کیے اور کفایت شعاری کو اپنایا ۔ حکومتی انداز میں ایسی تبدیلیاں دیکھنے کو مل رہی ہیں جن کی اس سے پہلے مثال نہیں ملتی۔ شفاف انداز میں خود پر توجہ دی اور اپنے آپ کو احتساب کیلئے پیش کیا جس کی زندہ مثال یہ تاریخی ایونٹ ہے۔ ہم نے اب تک کی کارکردگی ویب سائٹ پر ڈال دی ہے۔

انہوں نے حکومتی کارکردگی پر بریفنگ دیتے ہوئے کہا کہ 34 وعدوں کا تعلق وفاقی حکومت سے تھا آئندہ 2 ہفتوں میں پنجاب اور خیبر پختونخوا کی حکومتویں بھی اپنی کارکردگی کے بارے میں آگاہ کریں گی۔ وفاقی حکومت نے 18 اہداف کامیابی کے ساتھ مکمل کرلیے ہیں جبکہ باقی 16 پر تیزی سے کام جاری ہے۔منصوبے مکمل کا مطلب ہے کہ یہ لانچ کیلئے تیار ہیں۔

انہوں نے بتایا کہ

بیرون ممالک چھپائی گئی 11 ارب ڈالر کی جائیدادوں کا سراغ لگایا، سوئٹزر لینڈ اور برطانیہ کے ساتھ معاہدے کیے

پنجاب اور خیبر پختونخوا کیلئے بلدیاتی حکومت کے منصوبے کو حتمی شکل دے دی ہے

حکومت نے قانونی اصلاحات پر بھرپور توجہ دی ۔ عام آدمی کو عدالتوں سے انصاف ملے ، آئندہ ماہ

اکنامک سپورٹ پیکج کے تحت ہماری توجہ کا مرکز مینوفیکچرنگ میں تیزی لانا تھا تاکہ برآمدات بڑھائی جاسکیں۔ بجلی اور گیس سستی کی اور خام مال پر ٹیکسز میں کمی ، اکنامک ایڈوائزی کونسل بنائی ۔

مکانات کی تعمیر کو عملی جامہ پہنانے کیلئے نیا پاکستان ہاﺅسنگ سوسائٹی قائم کی جائے گی

ٹوارزم کے فروغ کیلئے صوبائی رابطوں میں بہتری کا فریم ورک مکمل کرلیا ہے جسے مشترکہ مفادات کونسل میں پیش کیا جائے گا

ایف بی آر ریفارمز روڈ میپ۔ اس حوالے سے ایف بی آر نے ادارے کی بہتری اور اصلاح کا منصوبہ تیار کیا ہے جس پر عملدرآمد کا آغاز ہوچکا ہے

کاروبار میں آسانی کی رینکنگ میں پاکستان 136 ویں نمبر پر ہے، ہم اسے ٹاپ 100 میں لانا چاہتے ہیں ۔ بورڈ آف انویسٹمنٹ کے روڈ میپ پر عمل جاری ہے

نیشنل فنانشل انکلیوژن پروگرام کی منظوری دے دی

زراعت کی ایمرجنسی پروگرام مرتب کیا ہے جس کے تحت فصلوں ، لائیو سٹاک ، فشریز کی ترقی کے پانچ منصوبے شامل ہیں

نیشنل واٹر پالیسی میں دیامر بھاشا اور مہمند ڈیم کو ہنگامی بنیادوں پر تعمیر کرنا شامل ہے

سوشل پروٹیکشن پروگرام ۔ یہ پروگرام وزیر اعظم کے دل کے بہت قریب ہے اور اس کا آغاز بہت جلد ہونے جارہا ہے ۔ اگلے پانچ سالوں کے دوران 2 کروڑ افراد کو غربت سے نجات ملے گی

10 بلین ٹری سونامی کے تحت ہم نے کسی بھی ترقی پذیر ملک کی سب سے موثر شجر کاری مہم کا آغاز کردیا ہے جس کے تحت 10 ارب درخت لگیں گے

ویمن جسٹس سسٹم ایکشن پلان کے تحت وزارت انصاف نے اس سلسلے میں ایک مکمل منصوبہ تیار کیا ہے جس پر عملدرآمد سے خواتین کیلئے انصاف کا حصول آسان ہوجائے گا

ہم وفاقی ایجوکیشن پلیو پرنٹ کوڈ لانچ کر چکے ہیں جس میں تعلیم تک رسائی میں خصوصی توجہ دی جارہی ہے اور وزیر اعظم ہاﺅس کو یونیورسٹی میں تبدیل کیا جارہا ہے

ہیلتھ بلیو پرنٹ کے تحت وفاقی حکومت دسمبر میں اپنی پہلی قومی صحت پالیسی کا اعلان کرنے جارہی ہے۔ہسپتالوں کو اپ گریڈ کیا جارہا ہے جبکہ صحت کا انصاف کارڈ کا دائرہ وسیع کیا جارہا ہے

اسلام آباد کو پینے کے صاف پانی کی فراہمی کیلئے کئی منصوبوں کو حتمی شکل دی جاچکی ہے

علاقائی اور المی اہمیت کو زیادہ سے زیادہ اجاگر کیا جائے۔ قریبی دوست ممالک کے ساتھ تعلقات کو مزید وسعت دے رہے ہیں، افغانستان میں قیام امن کیلئے کوشاں ہیں

مزید : Breaking News /اہم خبریں /قومی