ہمارے ادارے متحرک لہذا جمہوریت بھی متحرک ہے:صدر عارف علوی

ہمارے ادارے متحرک لہذا جمہوریت بھی متحرک ہے:صدر عارف علوی
ہمارے ادارے متحرک لہذا جمہوریت بھی متحرک ہے:صدر عارف علوی

  



اسلام آباد(صباح نیوز) صدر پاکستان ڈاکٹر عارف علوی کا اپنے بیان میں کہنا ہے کہ ہمارے ادارے متحرک ہیں لہذا جمہوریت بھی متحرک ہے اور ہم خوشحالی کے راستے کی جانب گامزن ہیں۔صدر کا کہنا ہے کہ یہ راستہ بعض اوقات مشکل لگتاہے لیکن ہم جرات اوراحتیاط کیساتھ آگے بڑھ رہے ہیں ہے۔

واضح رہے کہ رواں سال 19 اگست کو وزیراعظم عمران خان نے جنرل قمر جاوید باجوہ کو مزید 3 سال کے لیے آرمی چیف مقرر کیا تھا جسے گذشہ دنوں سپریم کورٹ میں چیلنج کیا گیا تھا۔26 نومبر کو عدالت نے آرمی چیف کی مدت میں توسیع کے نوٹی فکیشن کو معطل کرتے ہوئے کہا کہ وزیراعظم اس تقرری کے مجاز نہیں یہ صدر کا اختیار ہے۔آج 28 نومبر کو سپریم کورٹ نے آرمی چیف کی مدتِ ملازمت میں 6 ماہ کی مشروط توسیع کی منظوری دے دی ہے۔عدالت نے مختصر فیصلے میں کہا کہ تحمل کا مظاہرہ کرتے ہوئے یہ معاملہ پارلیمنٹ پر چھوڑتے ہیں، پارلیمنٹ آئین کے آرٹیکل 243 کے تحت آرمی چیف کی تقرری سے متعلق قانون سازی کرے، آرمی چیف جنرل قمر جاوید باجوہ نئی قانون سازی تک اپنے عہدے پر فرائض انجام دیں گے، آج عدالت میں پیش کیا جانے والا نوٹی فکیشن 6 ماہ کے لیے ہوگا۔

مزید : علاقائی /اسلام آباد