لاہور ہائیکورٹ نے حکومت سے سموگ کے خاتمے، منصوبہ پر تفصیلی رپورٹ طلب کر لی 

لاہور ہائیکورٹ نے حکومت سے سموگ کے خاتمے، منصوبہ پر تفصیلی رپورٹ طلب کر لی 

  



لاہور(نامہ نگارخصوصی)لاہور ہائیکورٹ نے پنجاب حکومت سے سموگ کے خاتمہ کی بابت کئے گئے اقدامات اورمستقبل کے منصوبہ کے بارے میں تفصیلی رپورٹ طلب کرلی۔نامزد چیف جسٹس مامون رشید شیخ نے سموگ کے خلاف مختلف درخواستوں کی سماعت کی۔ فاضل جج نے سموگ پر بروقت قابو نہ پانے پر برہمی کا اظہار کرتے ہوئے عدالت میں موجودسیکرٹری ماحولیات سلمان اعجاز اورڈی جی ماحولیات تنویر وڑائچ کو مخاطب کرکے ریمارکس دیئے کہ ہم یورو 2 پر ہیں دنیا یورو 5 پر جا چکی ہے،ہمارے روایتی درخت شیشم اور کیکر کو بیماری لگ چکی ہے،کوئی وجہ ہوتی ہے کہ ماحولیاتی آلودگی کے حوالے سے بین الاقوامی معیار کو کیوں اختیار نہیں کرنا؟اگر آپ یہ سمجھتے ہیں کہ آپکے سٹینڈرڈ ٹھیک ہیں اوراگر ڈبلیو ایچ او کے سٹینڈرڈ غلط ہیں تو عدالت کو بتائیں، اپنے سٹینڈرڈ ٹھیک کریں،اینٹوں کے بھٹے ابھی تک چل رہے ہیں،کیا ہمارے پاس بین الاقوامی معیار کی ٹیکنالوجی ہے،ہمارے پاس تو جہاز کے لئے پٹرول نہیں،فاضل جج نے استفسار کیا کہ ابھی مصنوعی بارش کا بھی سن رہے تھے،جس پر سیکرٹری ماحولیات نے کہا کہ ایسا کچھ نہیں ہے،سرکاری وکیل نے کہا کہ ریڈ زون ڈیکلیئر کرکے تمام  بھٹے بند کر دیئے ہیں،درخواست گزار کے وکیل نے کہا کہ ہم ثبوت دے دیتے ہیں کہ بھٹے چل رہے ہیں، جس پر سیکرٹری ماحولیات نے کہا کہ اگر کوئی چل رہے ہیں تو بند کر دیں گے،جس پر فاضل جج نے کہا کہ الزام سے پہلے جاگنے کی ضرورت ہے۔

سموگ،سماعت

مزید : صفحہ آخر