افغانستان: بم دھماکہ، 8بچوں، 5خواتین سمیت 15جاں بحق 

افغانستان: بم دھماکہ، 8بچوں، 5خواتین سمیت 15جاں بحق 

  



کوہاٹ (این این آئی) افغانستان کے شمالی صوبے قندوز اور تخار میں مختلف واقعات میں 15 افغان شہریوں‘ 17 طالبان اور 8سیکیورٹی اہلکاروں سمیت40 افرادہلاک اور دوبچوں سمیت 24 افرادزخمی ہوگئے۔آمدہ اطلاعات کے مطابق صوبہ قندوز میں بارودی سرنگ پھٹنے کے نتیجے میں شادی میں شرکت کرنے والے 8 بچوں اور5 خواتین سمیت 15 افغان شہری جاں بحق جبکہ صوبہ تخارمیں دو مختلف واقعات میں 8 سیکورٹی اہلکار اور17 طالبان ہلاک ہوگئے۔ سرحدپار سے موصولہ اطلاعات اور افغان میڈیا کے مطابق گزشتہ شام شمالی صوبہ قندوز کے ضلع حضرت امام صاحب میں سڑک کنارے نصب بارودی سرنگ سے ایک گاڑی ٹکراگئی جس کے نتیجے میں گاڑی میں سوار 15 افغان شہری جاں بحق اور دو بچے شدید زخمی ہوگئے۔ صوبائی گورنر عبدالجبار نعیمی کے حوالے سے مقامی میڈیا کے مطابق افغان شہری شادی کی ایک تقریب میں شرکت کرنے جارہے تھے کہ اْن کی گاڑی بارودی سرنگ سے ٹکراگئی۔ بتایاجاتا ہے کہ جاں بحق افراد میں ایک ہی خاندان کے آٹھ افراد شامل ہیں جن میں تین خواتین اور پانچ بچے شامل ہیں۔صوبائی گورنر نے واقعہ کی ذمہ داری طالبان پر ڈال دی ہے۔ادھرصوبہ تخار کے صوبائی کونسل کے اراکین محمداعظم افضالی اور یعقوب نزاری کے حوالے سے افغان میڈیا نے بتایاہے کہ طالبان نے ضلع دارقد میں دو فوجی ا ڈوں پرحملہ کیا جس کے نتیجے میں 7 سیکویرٹی اہلکار ہلاک اور 10 دیگر زخمی ہوگئے۔ دریں اثناء افغان میڈیا نے افغان وزارت دفاع کے بیان کے حوالے سے خبر دی ہے کہ ضلع دارقدکے علاقے قاراتپہ میں سیکورٹی فورسزنے طالبان کے حملہ کو پسپا کرتے ہوئے فوجی آپریشن میں دواہم رہنماؤں اور ریڈ یونٹ کے 6 شدت پسندوں سمیت 17 طالبان کو ہلاک اور 6 کو زخمی کیا ہے۔ بیان کے مطابق سیکیورٹی فورسز اور طالبان کے مابین جھڑپ میں ایک سیکیورٹی اہلکارہلاک اور 6 دیگر زخمی ہوگئے۔بتایاجاتا ہے کہ دواہم طالبان رہنما قاری قادراور قہرآمان ہلاک ہونے والوں میں شامل ہیں۔افغان میڈیا کے مطابق ان واقعات پر طالبان کی طرف کوئی بیان جاری نہیں کیا گیا ہے۔

افغانستان

مزید : صفحہ آخر