انوار الحق کاکڑ مذہبی جبری تبدیلی سے تحفظ کیلئے پارلیمانی کمیٹی کے چیئرمین منتخب 

  انوار الحق کاکڑ مذہبی جبری تبدیلی سے تحفظ کیلئے پارلیمانی کمیٹی کے ...

  



اسلام آباد(این این آئی)مذہب کی جبری تبدیلی کے تحفظ کے حوالے سے تشکیل دی گئی پارلیمانی کمیٹی کا اجلاس چیئرمین کمیٹی کے انتخاب کے حوالے سے پارلیمنٹ ہاؤس میں منعقدہوا۔ سینیٹر ڈاکٹر اشوک کمار نے سینیٹر انوارالحق کاکڑ کا نام تجویز کیا جبکہ رکن قومی اسمبلی ملک محمدعامر ڈوگر نے ان کی تائید کی۔سینیٹر انوار الحق کاکڑ پارلیمانی کمیٹی کے متفقہ طور پر چیئرمین منتخب ہوگئے۔ چیئرمین کمیٹی نے اراکین کمیٹی کا پارلیمان کی اس اہم کمیٹی کا چیئرمین منتخب کرنے پر شکریہ ادا کرتے ہوئے کہا کہ یہ انتہائی اہم کمیٹی ہے جس میں حساس اور نازک معاملات کو دیکھا جائے گا۔ یہ ایشوز انسانی روح کے ساتھ جڑے ہوئے ہیں جو پاکستان کے معاشرے کی شکل ظاہرکرتے ہیں۔ موجودہ حکومت ریاست مدینہ کی بات کر رہی ہے اور یہ وہ رول ماڈل ہے جو ہمارے پیغمر اسلام ؐ نے دیا۔وفاقی وزیر برائے مذہبی امور نور الحق قادری نے نو منتخب چیئرمین کو مبارکباد دیتے ہوئے کہا کہ یہ کمیٹی دونوں ایوانوں کے ممبران پر مشتمل ہے۔مذہب کی جبری تبدیلی شرمناک عمل ہے اور اس کی کوئی بھی مذہب اجازت نہیں دیتا۔ اقلیتوں کے ساتھ مل کر ان معاملات کو بہتر کیا جائے۔سینیٹر ڈاکٹر اشوک کمار نے کہاکہ اقلیتوں کو مذہب کی جبری تبدیلی پر تشویش لاحق ہے۔ کمیٹی کا قیام خوش آئندہ ہے اس سے مسائل حل ہونگے۔اراکین قومی اسمبلی سونیلا رت، جے پرکاش،رمیش لال نے بھی نومنتخب چیئرمین کمیٹی کو مبارکباد پیش کرتے ہوئے کہا کہ اقلیتوں کے مسائل کے حل کیلئے وہ اپنا بھرپور کردار ادا کریں گے۔

 انوار الحق کاکڑ

مزید : صفحہ آخر