اداروں میں تصادم کی کوشش ناکام، فیصلے سے اندرونی، بیرونی دشمنوں کو شکست ہوئی: عمران خان

      اداروں میں تصادم کی کوشش ناکام، فیصلے سے اندرونی، بیرونی دشمنوں کو شکست ...

  



اسلام آباد (سٹاف رپورٹر، مانیٹرنگ ڈیسک، نیوز ایجنسیاں)وزیراعظم عمران خان نے کہا ہے کہ اداروں کے تصادم سے ملک میں عدم استحکام لانے والوں کو شکست ہوئی ہے، یہ ہمارے بیرونی دشمنوں اور اندرونی مافیا کے لیے بھی مایوسی کا دن ہے، مافیا نے لوٹ کا مار بیرون ملک چھپایا ہوا ہے، لوٹی ہوئی دولت باہر بھیجنے والے مافیاز اس لوٹ مار کے تحفظ کے لیے ملک کوغیرمستحکم کررہے ہیں۔سماجی رابطے کی ویب سائٹ پر ٹوئٹ کرتے ہوئے وزیراعظم عمران خان نے کہا کہ آج ملک کو عدم استحکام کا شکار دیکھنے والوں کیلئے مایوس کن دن ہے، اداروں میں تصادم نہیں ہوا بیرونی دشمن، اندرونی مافیاز کو خصوصی مایوسی ہوئی، اداروں کے تصادم سے ملک میں عدم استحکام لانے والوں کو شکست ہوئی۔وزیراعظم عمران خان نے کہا کہ یہ ہمارے بیرونی دشمنوں اور اندرونی مافیا کے لیے بھی مایوسی کا دن ہے، مافیا نے لوٹ کا مار بیرون ملک چھپایا ہوا ہے، لوٹی ہوئی دولت باہر بھیجنے والے مافیاز اس لوٹ مار کے تحفظ کے لیے ملک کوغیرمستحکم کررہے ہیں۔وزیراعظم عمران خان نے کہا کہ ہم نے 23سال تک آزاد عدلیہ کیلئے جدوجہد کی۔ انہوں نے کہاکہ چیف جسٹس آصف سعید کھوسہ کا بھرپور احترام کرتا ہوں۔اس سے قبل وزیراعظم عمران خان سے قانونی ٹیم نے ملاقات کی اور عدالتی کارروائی سے متعلق بریفنگ دی۔ وزیراعظم سے ملاقات کرنے والوں میں اٹارنی جنرل انور منصور بھی شامل تھے۔وزیراعظم عمران خان کو عدالتی کاروائی سے متعلق بریفنگ دی گئی اور عدالتی احکامات کی روشنی میں مسودے کا جائزہ بھی لیا گیا۔ وزیراعظم سے ملاقات کرنے والوں میں اٹارنی جنرل انور منصور بھی شریک تھے۔ عمران خان کو عدالتی کاروائی سے متعلق بریفنگ دی گئی، عدالتی احکامات کی روشنی میں مسودہ کا جائزہ لیا جا رہا ہے۔ عدالت عظمی میں جمع کروانے کے لیے نئی سمری پر بھی مشاورت کی گئی۔وزیر اعظم عمران خان نے صوبائی حکومتوں اور کسانوں کے مطالبے کو تسلیم کرتے ہوئے ملک بھر میں گندم کی نئی امدادی قیمت خرید 1365 روپے مقرر کر دی۔ حکومت نے چند روز قبل گندم کی قیمت کو 1300 سے بڑھا کر 1350 روپے فی من کیا تھا۔وزیر اعظم عمران خان نے گنے کی سرکاری قیمت کے تعین کے حوالے سے مختلف محرکات کا جائزہ اور صوبوں کو اس حوالے سے عملی اقدامات کرنے کی ہدایت کرتے ہوئے کہاہے کہ ملک میں زرعی شعبے کا فروغ خصوصاً چھوٹے کسانوں کو ریلیف فراہم کرنا حکومت کی اولین ترجیح ہے،اشیائے ضروریہ کی طلب و رسد، قیمتوں کے تعین، کسانوں کی لاگت کو کم کرنے اور انہیں سازگار ماحول فراہم کرنے کے لئے طویل مدتی پالیسی تشکیل دی جائے،کسانوں کے لاگتی اخراجات کو کم کرنے کے لئے پالیسی تشکیل دینے کا عمل ترجیحی بنیادوں پر مکمل کیا جائے۔ وزیر اعظم عمران خان کی زیر صدارت گنے کی قیمت کی سرکاری قیمت مقرر کرنے کے حوالے سے اعلیٰ سطحی اجلاس ہوا جس میں وزیرِ منصوبہ بندی اسد عمر، وزیر برائے نیشنل فوڈ سیکیورٹی مخدوم خسرو بختیار، وزیرِ اعلیٰ پنجاب سردار عثمان بزدار، مشیر تجارت عبدالرزاق داؤد، معاون خصوصی برائے اطلاعات ڈاکٹر فردوس عاشق اعوان، ترجمان ندیم افضل چن، وزیرِ خوراک پنجاب سمیع اللہ چوہدری، صوبائی وزیر زراعت پنجاب نعمان احمد لنگڑیال، وزیرِ خوراک خیبر پختونخواہ حاجی قلندر خان لودھی، متعلقہ محکموں کے وفاقی و صوبائی سیکرٹری صاحبان، چیئرپرسن مسابقتی کمیشن ودیا خلیل و دیگر افسران شریک ہوئے۔ اجلاس میں گنے کی سرکاری قیمت کے تعین کے حوالے سے مختلف محرکات کا جائزہ اور صوبوں کو اس حوالے سے عملی اقدامات کرنے کی ہدایت کی گئی۔ وزیر اعظم کو گندم کی قیمت مقرر کرنے کے حوالے سے اقتصادی رابطہ کمیٹی کے فیصلے سے آگاہ کیا گیا جس پر وزیرِ اعظم نے اطمینان کا اظہار کیا۔وزیرِ اعظم عمران خان نے اجلاس سے خطاب کرتے ہوئے کہا کہ ملک میں زرعی شعبے کا فروغ خصوصاً چھوٹے کسانوں کو ریلیف فراہم کرنا حکومت کی اولین ترجیح ہے اس کے ساتھ ساتھ حکومت اس بات پر بھی خصوصی توجہ دے رہی ہے کہ زرعی اور صنعتی شعبے کی ترقی کو مساوی طور پر یقینی بنایا جائے اور عام آدمی کو ریلیف فراہم کیا جائے۔ گنے کی سرکاری قیمت مقرر کرنے کے حوالے سے وزیرِ اعظم نے کہا کہ گنے کی قیمت مقرر کرتے ہوئے اس بات کو یقینی بنایا جائے کہ گنے کی مقرر کردہ سرکاری قیمت سے جہاں کسانوں کی حوصلہ افزائی ہو وہاں وہ تمام اقدامات کیے جائیں کہ چینی کی قیمت میں استحکام کو بھی یقینی بنایا جاسکے۔ دریں اثناوزیراعظم سے وزیراعلیٰ پنجاب نے ملاقات کی، عثمان بزدار نے انتظامی تبدیلیوں پر عمران خان کو اعتماد میں لیا۔ادھر وزیراعظم عمران خان کی زیر صدارت اجلاس ہوا جس میں وزیراعلیٰ پنجاب عثمان بزدار، وفاقی وزیر خسرو بختیار، مشیر تجارت، معاون خصوصی اطلاعات فردوس عاشق اعوان، ندیم افضل گوندل، پنجاب اور خیبرپختونخوا کے صوبائی وزرا نے شرکت کی

رد عمل

دوسرا انٹرو

اسلام آباد (سٹاف رپورٹر،این این آئی)وزیر اعظم عمران خان نے کہا ہے کہ ملک کو غیر مستحکم کرنے کی کوشش کی گئی تاہم اب پاکستان کو ترقی کرنے سے کوئی نہیں روک سکتا، سیاسی بنیادوں پر تعیناتی کی وجہ سے ادارے تباہ ہوئے،میرٹ کی بالادستی ہی ہماری پالیسی ہے، سپریم کورٹ میں جو کیس لگا ہوا تھا اس پر بھارت بہت خوش تھا،بھارت کی خواہشوں پر پانی پھر گیا۔وزیر اعظم عمران خان نے افریقی ممالک کے سفیروں کی کانفرنس سے خطاب کرتے ہوئے کہا کہ امریکہ میں تعینات کیے گئے ڈپلومیٹ کی تعریف بیرون ملک کی جا رہی ہے۔ ہم نے قابل لوگوں کو اداروں میں تعینات کرنے کی کوشش کی، اس سے قبل نااہل لوگوں کو اداروں میں اہم ذمہ داریوں پر بٹھایا گیا تھا۔ میرٹ کی بالادستی ہی ہماری پالیسی ہے۔انہوں ں ے کہا کہ پاکستانی سفیروں کی کارکردگی ہر جگہ بہترین ہے،وقت کے ساتھ ساتھ میرٹ کی بالادستی ختم ہونے سے ادارے کمزور ہوئے۔ چین نے میرٹ کی پالیسی پر عملدرآمد کر کے ترقی کی۔ سیاسی بنیادوں پر تعیناتی کی وجہ سے ادارے تباہ ہوئے۔عمران خان نے کہا کہ کرنٹ اکاؤنٹ خسارے کے خاتمے کیلئے ایکسپورٹ میں اضافہ ضروری ہے اور بیرون سرمایہ کاری آنے سے ہی کرنٹ اکاؤنٹ خسارے کا خاتمہ ہوتا ہے،کرنٹ اکاؤنٹ خسارے کی وجہ سے ملک غربت کی طرف چلا جاتا ہے اور سرمایہ کاری نہیں ہوتی۔انہوں نے کہا کہ ملک میں مالی خسارے کے باعث روپے کی قدر میں کمی ہوئی۔ بیرون ملک مقیم پاکستانی ہمارا اثاثہ ہیں۔وزیر اعظم نے کہا کہ گزشتہ دنوں ملک کو غیر مستحکم کرنے کی کوشش کی گئی اور دھرنے کو ہندوستانی میڈیا نے بھی بہت اٹھایا جبکہ اب سپریم کورٹ میں جو کیس لگا ہوا تھا اس پر بھی بھارت بہت خوش تھا اور اسے امید تھی کہ اداروں میں تصادم ہو گا۔انہوں نے کہا کہ پاکستان ایک مشکل وقت سے نکل کر اب آگے بڑھ رہا ہے اور اسے کوئی آگے بڑھنے سے روک نہیں سکے گا۔انہوں نے کہاکہ بھارت نے سپریم کورٹ کا معاملہ بھی استعمال کیا، بی جے پی حکومت دھرنے،مارچ اورحالیہ صورتحال کی وجہ سے خوش تھی وہ سوچ تھی پاکستان میں ادارے آپس میں لڑجائیں گے، ہمیں خوشی ہے بھارت کی خواہشوں پرایک بارپھرپانی پھرگیا۔وزیر اعظم نے کہاکہ پاکستان مشکل وقت سے نکل کرتیزی سے آگے بڑھ رہاہے، دشمنوں کی کوئی خواہش پوری نہیں ہوگی،پاکستان ترقی کریگا۔وزیراعظم نے کہاکہ کہ چین نے اپنے اداروں میں میرٹ پرتعیناتیاں کیں،میرٹ پرتعیناتیوں کیلئے چین نے ایک سسٹم بنایاہواہے اور میرٹ کی پالیسی پرعملدرآمدکرکے ہی چین نے ترقی کی۔انہوں نے بتایا کہ منیراکرم پاکستان کے بہترین سفارتکارہیں،چین کے سفیرکے ریمارکس کے بعدمنیراکرم کی یواین میں تعیناتی کی، چین کے ایک سفیرنے مجھ سے کہامنیراکرم کی شاندارکارکردگی رہی۔

عمران خان

مزید : صفحہ اول