عمران خان کبھی نہیں چاہیں گے فوج کسی عدالتی فیصلے کی زد میں آئے: ولیم مائیلم 

عمران خان کبھی نہیں چاہیں گے فوج کسی عدالتی فیصلے کی زد میں آئے: ولیم مائیلم 

  



واشنگٹن(اظہر زمان، بیوروچیف) سابق امریکی سفیر ولیم مائیلم نے یقین ظاہر کیا ہے عمران خان کی موجودہ حکومت کا فوج کی حمایت پر بہت انحصار ہے اس لئے وہ نہیں چاہیں گے فوج عدالت کے کسی حکم کی زد میں آئے۔امریکی میڈیا سے گفتگو کرتے ہوئے مسٹر مائیلم نے یقین ظاہر کیا سپریم کورٹ میں حکومت کی خواہش کے مطابق یہ مسئلہ حل ہو گیااور کوئی بحران یا بڑی تبدیلی پیدا نہیں ہو گی۔ افغانستان کے امن عمل میں پاکستان کے کردار سے متعلق انکاکہنا تھا پاکستان اس سلسلے میں سب سے پہلے اپنے مفاد کو مدنظر رکھے گا۔ انہوں نے تسلیم کیا اس وقت امن عمل انتشار کا شکار ہے لیکن پاکستان وہاں ہمیشہ اپنا ایک پراکسی عنصر رکھے گا۔ مطلب مفاہمتی عمل میں تحریک افغان طالبان میں اپنا ایک حمایتی گروہ کو اہمیت دلانے کی کوشش کرے گا تاکہ افغانستان میں اس کے مفادات کا تحفظ ہو سکے۔ پاکستان کافی عرصے سے اس نئی حقیقت سے آگاہ ہو چکا ہے اس کا افغان طالبان پر اثر و رسوخ اب محدود ہو چکا ہے۔ پاکستان میں اپنی سفار تکاری کے دوران کی مثال بیان کرتے ہوئے ولیم مائیلم نے بتایا اس وقت جب طالبان مزار شریف میں بدھ کے مجسموں کو اڑانے کی کوشش کرنیوالے تھے تو پاکستان نے ان کو روکنے کی کوشش کی لیکن انہوں نے پاکستان کی درخواست کو نظر انداز کر دیا تھا۔ اس وقت بھی پاکستان کا طالبان پر اتنا اثر نہیں تھا اور آج بھی اس کا اتنا اثر نہیں جتنا عمومی طور پر سمجھا جاتا ہے۔ دونوں ممالک میں ڈیورنڈ لائن پر کشیدگی کی ایک طویل تاریخ ہے کیونکہ پاکستان کے برعکس افغانستان اسے مستقل سرحد تسلیم نہیں کرتا اور افغان 1940ء کے عشرے سے پاکستان کے وجود کی مخالفت کر رہے ہیں۔

سابق امریکی سفیر

مزید : صفحہ اول