ایبٹ آباد میں جمعیت  کے زیر اہتمام احتجاجی مظاہرہ

ایبٹ آباد میں جمعیت  کے زیر اہتمام احتجاجی مظاہرہ

  



ایبٹ آباد (ڈسٹرکٹ رپورٹر) جمعیت علماء اسلام کے زیر اہتمام متحدہ اپوزیشن کا  ایبٹ آباد میں احتجاجی مظاہرہ واجلاس،ایبٹ آباد پریس کلب میں منعقدہ اجلاس میں متحدہ اپوزیشن کے جمعیت علماء اسلام کے ضلعی صدر انیس الرحمن، مسلم لیگ ن ضلعی سینیئر نائب صدر سردار عبد الرشید،سردار ذوق اختر،  سابق امیدوار صوبائی اسمبلی مولانا مفتی ہاشم،ضلعی جنرل سیکرٹری مولانا غلام مجتبیٰ، سرپرست قاری محبوب الرحمن،مولانا عبد الصبور ہاشمی،مولانا شفیع الرحمن،مولانا خالد،قاری عبد الرحیم شاہ  اور دیگر نے خطاب کیا،مقررین کا کہنا تھا متحدہ اپوزیشن رہبر کمیٹی کی سفارشات کی روشنی پر پلان سی  کا سلسلہ جاری ہے انہوں نے کہا کہ موجودہ سیلیکٹڈ حکومت سے سب نالاں ہیں اس حکومت کو پہلے سے طے  شدہ  ایجنڈہ کے تحت مسلط کیاگیا  انہوں نے  کہا کہ جغرافیائی سرحدوں کو بھی چھیڑا اور نظریاتی سرحدوں پر بھی وار کیا،مہنگائی کے بم گرائے اور قادیانیوں کو کھلی چھٹی دی اور آواز اٹھانے پر انتقامی کارروائیوں حافظ حمد اللہ کی شہریت منسوخ کرنا،اور مفتی کفایت اللہ پر قاتلانہ حملہ سب کے سامنے ہیں مقررین کا کہنا تھا یہ حکومت داخلی،خارجہ سمیت ہر محاذ پر ناکام ہوچکی ہے اس وقت ملک میں بے یقینی کی کیفیت ہے حکومت کو چائیے وہ خاموشی سے چلے جائے،علمائے کرام نے ناروے میں قرآن کریم کی بے حرمتی پر سخت تشویش کا اظہار کیا انہوں نے کہا کہ امت مسلمہ بھی ایک اضطراب کی حالت میں ہے،اور  ملک میں بھی توہین رسالت کرنے والوں کو مکمل تحفظ دے کر بیرون ملک بھیجا، ہم کیسے تصور کریں یہ حکومت ریاست مدینہ کے نام لینے کی مستحق ہے لیکن ہمارے حکمرانوں کو زرا بھر شرم نہیں ناروے میں قرآن کریم کی بے حرمتی کرنے پر دو بول بھی نہیں بول سکے اور نہ ہی سفارتی سطح پر ناروے کے سفیر کی باز پرس کی گئی،مقررین  کا کہنا تھا مغرب نے سیاسی سماجی  طور پر ہمارے نظام کو قابو میں کر رکھا ہے اس میں جمعیت علماء اسلام ایک حقیقی اسلام کا  تصور پیش کررہی ہے کیونکہ ہمارا آئین صرف کتاب کی شکل میں رہ چکا ہے اورروح اور  کنٹرول کسی اور کے ہاتھ میں ہے،اج اداروں کے  آپس میں ٹکراؤ سے غیر یقینی صورتحال پیدا ہورہی ہے،مقررین کا کہنا تھا ہم سب کو مل کر ملک کی بہتری کیلئے کام کرنے کی ضرورت ہے۔بعد ازاں شدید بارش کے باوجود پریس کلب کے بائر احتجاجی مظاہرہ کیا اور رہبر کمیٹی کی سفارشات پر مکمل اعتماد کا اظہار کیا۔اور مانسہرہ انٹر چینج پر مولانا مفتی کفایت اللہ پر قاتلانہ حملہ کی مذمت کرتے ملزمان کی گرفتاری کا مطالبہ کیا ہے۔

مزید : پشاورصفحہ آخر