عوام رابطہ مہم کے سلسلیمیں تحصیل گور کھڑی میں کھلی کچہری 

عوام رابطہ مہم کے سلسلیمیں تحصیل گور کھڑی میں کھلی کچہری 

  



پشاور (کرائمز رپورٹر)ایس ایس پی آپریشن ظہور بابر آفریدی نے عوامی رابطہ مہم کے سلسلے میں پشاور کی تاریخی عمارت تحصیل گور گھٹڑی میں پشاور کے رہائشیوں اور تاجروں کیساتھ کھلی کچہری کا انعقاد کیا جس میں نو تعینات ایس پی سٹی محمد شعیب، ڈی ایس پی سٹی ٹو عتیق شاہ اور ڈی ایس پی گوہر خان سمیت ایس ایچ اوز اور دیگر پولیس آفسران بھی موجود تھے، کھلی کچہری میں تاجر رہنماوں عمائدین علاقہ، سفید ریشوں، پراپرٹی ڈیلر ایسوسی ایشن، سابقہ ناظمین اور بلدیاتی نمائندگان سمیت مختلف طبقہ ہائے فکر سے تعلق رکھنے والے افراد نے کثیر تعداد میں شرکت کی، کھلی کچہری سے ایس ایس پی آپریشنز ظہور بابر آفریدی نے خطاب کرتے ہوئے سائلین کو درپیش مسائل کے فوری حل، بازاروں کی سکیورٹی کا از سر نو جائزہ لینے اور تجارتی مراکز میں مرد اہلکاروں کے ساتھ ساتھ لیڈیز پولیس اہلکار بھی تعینات کرنے کا فیصلہ کیا گیا ہے جس کے تحت ابتدائی طور پر مینا بازار میں خواتین رائیڈر سکواڈ کو تعینات کیا جا رہا ہے، انہوں نے اسٹریٹ کرائمز پر قابو پانے، جرائم پیشہ عناصر کی نشاندہی اور منشیات فروشوں کیخلاف جاری مہم میں پولیس کا ساتھ دینے کی ضرورت پر زور دیا، ایس ایس پی شرکاء کی جانب سے ایک سوال کے جواب میں واضح کیا کہ ضلع بھر میں لینڈ مافیا کے خلاف خصوصی کریک ڈاؤن جاری ہے جس میں مزید تیزی لائی جا رہی ہے تفصیلات کے مطابق گزشتہ روز ایس ایس پی آپریشنز ظہور بابر آفریدی کی سربراہی میں اندرون شہر کے تاریخی جگہ تحصیل گور گھٹڑی میں رہائشیوں اور تاجروں کیساتھ کھلی کچہری کا انعقاد کیا گیا جس میں ایس پی سٹی محمد شعیب، ڈی ایس پی سٹی ٹو عتیق شاہ اور ڈی ایس پی گوہر خان سمیت دیگر پولیس آفسران بھی موجود تھے، کھلی کچہری میں تاجروں، سابقہ ناظمین، کونسلرز اور معززین علاقہ سمیت مختلف طبقہ ہائے فکر سے تعلق رکھنے والے افراد نے کثیر تعداد میں شرکت کی جنہوں نے اپنے علاقوں کے اجتماعی مسائل سے ایس ایس پی آپریشنز کو آگاہ کیا،  جس پر ایس ایس پی آپریشن نے تمام حل طلب مسائل کے بارے میں موقع پر ہی ضروری ہدایات جاری کیں، ایس ایس پی آپریشنز نے اس موقع پر واضح کیا کہ پشاور پولیس کی جانب سے منشیات فروشوں خصوصا آئس فروخت کرنے والوں اور لینڈ مافیا کے خلاف خصوصی کریک ڈاؤن جاری ہے جس کے دوران متعدد ملزمان کو گرفتار کر کے جیل کی سلاخوں کے پیچھے دھکیل دیا گیا ہے تاہم انہوں نے واضح کیا کہ جاری کریک ڈاؤن میں مزید تیزی لائی جا رہی ہے جس کے دور رس نتائج سامنے آئیں گے، انہوں نے منشیات اور دیگر جرائم کے خاتمے میں شہریوں اور عوامی حلقوں کی جانب سے پولیس کے ساتھ تعاون کی ضرورت پر بھی زور دیا، ایس ایس پی ظہور بابر آفریدی نے کھلی کچہری میں شامل تاجروں کو مخاطب کرتے ہوئے کہا کہ پشاور پولیس تاجروں کے تحفظ کے لئے ترجیحی بنیادوں پر کام کر رہی ہے، انہوں نے مزید کہا کہ مختلف بازاروں میں پولیس گشت میں اضافے کے ساتھ ساتھ خواتین بازاروں میں لیڈیز پولیس اہلکاروں کو تعینات کرنے کا اصولی فیصلہ کر لیا گیا ہے جس کے تحت ابتدائی طور پر مینا بازار میں خواتین اہلکاروں کو تعینات کیا جا رہا ہے جس سے نہ صرف خریداری کے لئے آنے والی خواتین کے مسائل کو حل کیا جا سکے گا بلکہ ان میں تحفظ کا احساس بھی تقویت پائے گا ایس ایس پی نے مزید کہا کہ جرائم کی روک تھام، اسٹریٹ کرائم کے خاتمے اور منشیات سمیت مختلف معاشرتی برائیوں کے تدارک  میں عوامی تعاون کو قدر کی نگاہ سے دیکھتے ہیں آخر میں شرکاء نے کھلی کچہریوں کے سلسلے پر اطمینان کا اظہار کرتے ہوئے امن و امان کے قیام میں پشاور پولیس کے کردار کو سراہتے ہوئے جرائم کے روک تھام میں کلیدی کردار ادا کرنے کا عزم ظاہر کیا۔

مزید : پشاورصفحہ آخر