پولیس میرے خلاف انتقامی کارروائیاں کررہی ہے، جمشید دستی

پولیس میرے خلاف انتقامی کارروائیاں کررہی ہے، جمشید دستی

  



مظفرگڑھ (نمائندہ خصوصی)پاکستان عوامی راج پارٹی کے چیئرمین مزدور رہنما جمشید احمد دستی نے ایک بیان میں کہا ہے کہ گزشتہ دس پندرہ یوم سے مظفرگڑھ پولیس میرے خلاف انتقامی کارروائیوں میں مصروف ہے آئین اور قانون پسند شہری ہوں اس لئے اپنے خلاف ہونے والی انتقامی کارروائیوں کے خلاف عدالت عالیہ لاہور ہائیکورٹ ملتان بنچ سے رجوع کیا ہے جہاں عدالت نے مجھے حفاظتی ضمانت دیتے ہوئے 5دسمبر کو میرے خلاف درج مقدمات کی تفصیل طلب کی ہے انہوں نے کہا میرے (بقیہ نمبر14صفحہ12پر)

خلاف ایک مقدمہ 16 ایم پی او کا ہے جس میں بہاری کالونی کچی آبادی کے غریبوں کی جانب سے انکے گھر گرانے پر ہونے والے احتجاج میں شرکت کی وجہ سے ہوا جبکہ دوسرا مقدمہ تھانہ شاہ جمال میں فری بس کی وجہ سے مجھ پر درج کیا گیا انہوں نے کہا میں نے ہمیشہ عدالتوں کا احترام کیا ہے اور عدالتوں سے مجھے انصاف ملا ہے ان شاء اللہ آئندہ بھی مجھے انصاف ملنے کی امید ہے انہوں نے کہا پولیس اور انتظامیہ نے حکمرانوں کے حکم پر میرے بھائی کی جانب سے ہر سال ہونے والے ثقافتی میلے کی اجازت نہیں دی جبکہ ضلع بھر میں میلوں کی اجازت دی گئی اور تھل جیپ ریلی بھی منعقد ہوئی مگر 300 سالہ قدیم روحانی بزرگ کے نام پر ہونے والے میلے کا اجازت نہیں دی گئی جبکہ اس میلے میں پورے پاکستان سے نامور پہلوان شرکت کرتے ہیں کیونکہ میرے دادا اور والد مرحوم بھی پہلوان تھے میلے میں عوام کو فری تفریح ملنی تھی مگر اس میلے کا انتقامی کارروائیوں کی نظر کر دیا گیا انہوں نے کہا حکمرانوں کے حکم پر پولیس نے فری بس سروس بند کرکے غریبوں مزدروں طلباء کسانوں کا نقصان کیا ہے یہ عوامی فلاحی فری بس سروس ہے مگر حکمران اسے بھی انتقام کا نشانہ بنا کر بند کر چکے ہیں انہوں نے کہا کہ میں نئے تعینات ہونے والے آئی جی پنجاب اور چیف سیکریٹری پنجاب سے اپیل کرتا ہوں کہ وہ حکمرانوں کے غیر قانونی احکامات ماننے کی بجائے عام آدمی کو ریلیف دیں انہوں نے کہا جھوٹے مقدمات ظلم لاقانونیت مہنگائی بے روزگاری حد سے بڑھ چکی ہے اگر عام آدمی پر ہونے والے مظالم کے خلاف آواز اٹھانا جرم ہے تو میں پرامن احتجاج اور ان مظالم کے خلاف آواز بلند کرکے اپنا آئینی اور بطور پاکستانی کردار ادا کرتا رہونگا عمران خان اور انکی ٹیم نااہل ہے حکومت کے حالات خراب ہوچکے ہیں اور یہ چند ماہ کی مہمان ہے۔

جمشید دستیش

مزید : ملتان صفحہ آخر