پسند کی شادی کا بھیانک انجام، دولہا ایک سال بعد ہی قتل لیکن لڑکی کس کی مبینہ دلہن بن کر رہ گئی؟ انتہائی دردناک کہانی منظرعام پر

پسند کی شادی کا بھیانک انجام، دولہا ایک سال بعد ہی قتل لیکن لڑکی کس کی مبینہ ...
پسند کی شادی کا بھیانک انجام، دولہا ایک سال بعد ہی قتل لیکن لڑکی کس کی مبینہ دلہن بن کر رہ گئی؟ انتہائی دردناک کہانی منظرعام پر

  



لاڑکانہ(ویب ڈیسک) دو سال قبل پسند کی شادی کرنے والی لڑکی کو پولیس نے اس حالت میں بازیاب کرایا ہے کہ وہ اپنے پہلے خاوند کے بوڑھے ماموں کی مبینہ بیوی بن چکی ہے۔ پولیس بازیاب ہونے والی لڑکی کو آج عدالت میں پیش کرے گی۔

ہم نیوز کے مطابق حسن واہن تھانہ کی حدود میں پولیس نے کارروائی کرتے ہوئے ایک 16 سالہ لڑکی کو بازیاب کرایا ہے۔ چینل ذرائع کے مطابق لڑکی نے دو سال اس وقت پسند کی شادی کی تھی جب اس کی عمر صرف 14 سال تھی۔مریم ڈیرو نامی لڑکی نے 14 سال کی عمر میں فیاض برڑو سے مبینہ طور پر پسند کی شادی کی تھی جو صرف ایک سال کے بعد ہی قتل ہو گیا۔ایس ایچ او ویمن پولیس سٹیشن یاسمین چانڈیو کے مطابق پہلے شوہر کے قتل ہونے کے بعد مریم سے فیاض کے 50 سالہ بوڑھے ماموں لیاقت برڑو نے مبینہ طور پر زبردستی شادی کی۔

گزشتہ دو سال کے دوران مریم اپنے والدین اور دیگر عزیز و رشتہ داروں سے مل بھی نہیں سکی ہے۔ایس ایچ او ویمن یاسمین چانڈیو نے بتایا کہ موقع ملنے پر مریم نے اپنی موجودگی کی بابت بتایا تو پولیس نے اسے بازیاب کرایا ہے۔ بازیاب ہونے والی مریم کو آج عدالت میں پیش کیا جائے گا۔سماجی ماہرین کے مطابق پسند کی شادی کا یہ انجام حقیقتاً 16 سالہ مریم کے لیے ایک بھیانک خواب کی مانند ہے کہ اس کم عمری میں وہ اپنے خاوند کے قتل کا دکھ سہنے کے ساتھ ساتھ اس کے ماموں کی زبردستی بیوی بننے پہ مجبور ہوئی اور ہر گزرتے پل نے اس کی روح کو جس طرح کچوکے لگائے ہوں گے اس کا کوئی حساب نہیں دے سکے گا۔

مزید : علاقائی /سندھ /لاڑکانہ