سابق صدر پرویز مشرف کے وکیل نے خصوصی عدالت پر سنگین الزام عائدکردیا

سابق صدر پرویز مشرف کے وکیل نے خصوصی عدالت پر سنگین الزام عائدکردیا
سابق صدر پرویز مشرف کے وکیل نے خصوصی عدالت پر سنگین الزام عائدکردیا

  



اسلام آباد (ڈیلی پاکستان آن لائن)سابق صدر پرویز مشرف کے وکیل سلمان صفدر نے کہا ہے کہ اس سے بڑا غیر منصفانہ ٹرائل کیا ہوگا کہ پرویز مشرف کے وکیل کو ان کی وکالت سے الگ کردیا گیا ہے؟ ہر شہری کاحق ہے کہ اس کو منصفانہ ٹرائل کاموقع دیا جائے لیکن پرویز مشرف کے کیس میں ایسا نہیں کیاجارہا ۔

جیونیوز کے پروگرام ”نیا پاکستان “میں گفتگو کرتے ہوئے وکیل پرویز مشرف بیرسٹر سلمان صفدر نے کہ کہ ایسے لگ رہا تھا کہ خصوصی عدالت تمام قواعد و ضوابط کو بالائے طاق رکھتے ہوئے عجلت میں کوئی فیصلہ کرنے جارہی تھی جس پر اسلام آباد ہائیکورٹ نے درخواست دائر ہونے پر عدالت کو فیصلہ دینے سے روک دیا ، اس کیس میںملزم کا بیان ریکارڈ کیاجانا انتہائی ضرور ی ہے۔ انہوں نے کہا کہ پرویزمشرف پچھلے سات آٹھ ماہ سے شدید علیل ہیں اور ان کی کیموتھراپی ہوتی ہے ،اس لئے وہ اس پوزیشن میں نہیں ہیں کہ پاکستان آکر اپنا بیان ریکارڈ کرواسکیں۔

انہوں نے کہا کہ میں جب بھی پرویز مشرف سے پوچھتا ہوں ، وہ یہی کہتے ہیں کہ میں پاکستان آناچاہتا ہوں لیکن میر ی صحت اس کی اجازت نہیں دے رہی ۔ انہوں نے کہا کہ اس سے بڑا غیر منصفانہ ٹرائل کیا ہوگا کہ پرویز مشرف کے وکیل کو ان کی وکالت سے الگ کردیا گیا ہے ۔ انہوں نے کہا کہ ہر شہری کاحق ہے کہ اس کو منصفانہ ٹرائل کاموقع دیا جائے لیکن پرویز مشرف کے کیس میں ایسا نہیں کیاجارہا ۔ انہوں نے کہا کہ میں نے اس کیس میں کسی کی معاونت نہیں کرنی اور معاونت بھی اس وکیل کی جو سرکار لے کرآئے ۔

مزید : قومی