حکومت نے سابقہ قبائلی علاقوں کیساتھ وپنے وعدے پورے نہیں کئے:سراج الحق

حکومت نے سابقہ قبائلی علاقوں کیساتھ وپنے وعدے پورے نہیں کئے:سراج الحق

  

 لاہور (آن لائن)امیر جماعت اسلامی پاکستان سینیٹر سراج الحق نے کہاہے کہ حکومت نے سابقہ قبائلی علاقوں کے ساتھ اپنے وعدے پورے نہیں کیے۔ قبائلی علاقوں کا خیبر پختونخوا میں انضمام تو ہوا، لیکن وہاں کوئی کام نہیں ہوا۔ حکومت صرف وعدوں پر ٹرخا رہی ہے۔وزیراعظم نے عوام کو سبز باغ دکھانے کی پالیسی اپنا رکھی ہے۔ طویل بدامنی کی وجہ سے قبائلی علاقوں کی معیشت زراعت اور تجارت بیٹھ گئی اور زندگی مفلوج ہو گئی ہے۔ قبائلی عوام نے ملک کے لیے بے شمار قربانیاں دی ہیں مگر ان کی قربانیوں کا کوئی صلہ نہیں ملا۔ حکومت نے این ایف سی ایوارڈ میں قبائل کو تین فیصد رقم دینے کا وعدہ کیا تھا، مگر دوسرے وعدوں کی طرح حکومت نے اس وعدہ پر بھی عمل نہیں کیا جس سے قبائل میں سخت مایوسی پائی جاتی ہے۔ ان خیالات کا اظہار انہوں نے باجوڑ میں قبائلی عمائدین اور کارکنوں سے گفتگو کرتے ہوئے کی۔ سینیٹر سراج الحق نے کہاکہ حکومت اعلانات، وعدوں اور دعووؤں کے سہارے چلنے کی کوشش کر رہی ہے۔ قبائلی علاقوں کا خیبر پی کے میں انضمام تو ہوا لیکن ان کے ساتھ وعدوں کا احترام نہیں ہوا۔ حکومت نے قبائلی علاقوں میں امن و امان کے قیام کے لیے چالیس ہزار لیویز بھرتی کرنے، علاقے میں میڈیکل کالج اور ایک یونیورسٹی بنانے کاوعدہ کیا تھا مگریونیورسٹی تو کیا، علاقے میں کوئی ایک نیا سکول نہیں کھولا گیا۔ قبائلی علاقوں میں بنیادی انفراسٹرکچر بری طرح تباہ ہوچکاہے، سڑکیں،مارکیٹیں،تعلیمی ادارے اور ہسپتال جنگ زدہ علاقے کا منظر پی کر رہے ہیں۔ قبائلی عوام انتہائی کسمپرسی اور پریشانی میں زندگی گزار نے پر مجبور ہیں۔ نوجوانوں کو تعلیم کی سہولت دستیاب ہے نہ روزگار مل رہاہے۔ انہوں نے کہاکہ حکومت کا فرض تھاکہ انضمام کے بعد ان علاقوں کی تعمیر و ترقی پر خصوصی توجہ دیتی اور علاقے میں تباہ شدہ انفراسٹرکچر کو بحال اور تعمیر نو کی جاتی، مگر حکومت نے انضمام کے بعد بھی ان علاقوں کو لاوارث چھوڑ دیاہے۔ 

سراج الحق

مزید :

صفحہ آخر -