منشیات برآمدگی کیس، 5سال بعدعمر قید کی سزا پانے والا ملزم بری 

منشیات برآمدگی کیس، 5سال بعدعمر قید کی سزا پانے والا ملزم بری 

  IOS Dailypakistan app Android Dailypakistan app

 
لاہور(نامہ نگارخصوصی)لاہور ہائی کورٹ کے جسٹس چودھری عبدالعزیز اور مسٹرجسٹس مرزاوقاص رؤرف پرمشتمل ڈویژن بنچ نے 12کلو منشیات برآمدگی کے مقدمہ میں 5سال بعدعمر قید کی سزا پانے والے ملزم عبدالحامدکوشک کا فائدہ دیتے ہوئے بری کردیا فاضل بنچ نے 8صفحات پر مشتمل تحریری فیصلہ جاری کردیا   جس کے مطابق پراسکیوشن نے متعدد ایسے گواہوں پر جرح نہیں کرائی جو کہ حقائق کے لئے ضروری تھے،کانسٹیبل ارسلان حیدر نے جائے وقوع سے ریکوری کی مگر پراسکیوشن نے اس کابیان ہی نئی ریکارڈ کرایا،عدالتی فیصلے میں مزیدکہا گیا ہے کہ اے این ایف نے وقوع کے آٹھ ماہ بعد ملزم کو گرفتار کیا، اے این ایف کے جس کانسٹیبل نے ملزم کے خلاف اشتہاری کی کارروائی کرائی اسے بھی گواہ نہیں بنایا،جائے وقوعہ سے ملزم کی گاڑی لانے والے کانسٹیبل کو بھی گواہ کی فہرست میں شامل نہیں کیا گیا، پراسکیوشن اتنے سنگین نوعیت کیس کو بغیر کسی شک کے ثابت کرنے کی ذمہ داری سے بھاگ نہیں سکتی جبکہ موجودہ کیس میں پراسکیوشن اپنے کیس کو ثابت نہیں کرپائی لہذا فاضل بنچ ملزم کی اپیل منظور کرتے ہوئے اسے جیل سے رہا کرنے کا حکم دیا ہے، ملزم عبدالحامد کے خلاف 2017 ء میں اے این ایف نے منشیات برآمدگی کا مقدمہ درج کیا تھا اورٹرائل کورٹ نے جرم ثابت ہونے پر اسے 2019 میں ء عمر قید و جرمانے کی سزا سنائی تھی۔
ملزم بری 

مزید :

صفحہ آخر -