چوہدری عبدالوحید آرائیں، چوہدری نوید کیخلاف پلاٹ الاٹ کرنیکا الزام، لاہور ہائیکورٹ کا ایکشن، ہ انکوائری کا حکم معطل

چوہدری عبدالوحید آرائیں، چوہدری نوید کیخلاف پلاٹ الاٹ کرنیکا الزام، لاہور ...

  IOS Dailypakistan app Android Dailypakistan app


ملتان(وقائع نگار)ہائی کورٹ ملتان بنچ کے جج جسٹس محمد امجد رفیق نے سابق صوبائی وزیر چوہدری عبدالوحید ارائیں اور اس کے بھائی سابق  مئیر میونسپل کارپوریشن (بقیہ نمبر13صفحہ6پر)
چوہدری نوید ارائیں اور سابق ڈائریکٹر جنرل ایم ڈی اے ممتاز احمد قریشی کے خلاف فاطمہ جناح ٹاون میں  اپنے چہیتوں کو پلاٹ کرنے اور اپنی اراضی لینڈ ایکوزیشن سے سیاسی اثرورسوخ استعمال کرکے نکلوانے کے الزامات کے تحت دوبارہ انکوائری کا حکم معطل کرتے ہوئے محکمہ انسداد رشوت ستانی اور فریقین کو 14 دسمبر کیلئے نوٹس جاری کردیئے ہیں۔پیٹیشنر کے وکیل چوہدری طاہر محمود نے موقف اختیار کیا کہ یہ 2010 کا کیس ہے اور اس کی انکوائیری ڈائریکٹر جنرل اینٹی کرپشن پنجاب اور دیگر افسران کرچکے ہیں۔اس انکوائری کو اس وقت کے وزیر اعلی میاں شہباز شریف نے رکوادیا تھا۔اس آرڈر کے خلاف ہائی کورٹ میں رٹ دائر کی گئی۔ جو خارج ہوگئی پیٹیشنر عبدالکریم نے اخراج کے خلاف انٹرا کورٹ اپیل دائر کی وہ بھی خارج ہوگئی۔بعد ازاں اینٹی کرپشن کورٹ میں استغاثہ دائر کیا وہ بھی خارج ہوگیا۔یہ معاملہ سپریم کورٹ تک گیا اور سپریم کورٹ نے قرار دیا کہ 16 ایکڑ اراضی کو لینڈ ایکوزیشن سے نکالنے میں کوئی اثرورسوخ استعمال نہیں ہوا ہے۔فاضل عدالت نے سٹے جاری کرتے ہوئے انٹی کرپشن کو حکم دیا کہ پیٹیشنرز کے خلاف کوئی کاروائی نہ کی جائے