شرح سود 16فیصد کرنا رئیل اسٹیٹ سیکٹر کے خلاف گہری سازش: میاں طلعت

شرح سود 16فیصد کرنا رئیل اسٹیٹ سیکٹر کے خلاف گہری سازش: میاں طلعت

  IOS Dailypakistan app Android Dailypakistan app


        لاہور(رپورٹ میاں اشفاق انجم، تصاویر، ایوب بشیر) شرح سود 16فیصد کرنا رئیل اسٹیٹ سیکٹر کے خلاف گہری سازش،پراپرٹی سے سرمایہ کاری نکال کر بینکوں میں جمع کرانے کے لئے بھاری معاوضے کی ترغیب دی جا رہی ہے۔ ایک طرف سود کے خلاف اپیلیں واپس لینے کا پراپیگنڈاکیاجا رہا ہے دوسری طرف پوری قوم کو سودی نظام کے کنویں میں دھکیلا جا رہا ہے۔ملکی معیشت کو صرف رئیل اسٹیٹ سیکٹر بچا سکتا ہے، بیرونی ممالک سے سرمایہ کاری لانے کے لئے اوورسیز پاکستانیوں کے لئے خصوصی پیکیج اعلان کیا جائے، رئیل اسٹیٹ سیکٹر پر عائد ٹیکسز واپس لئے جائیں،ڈی ایچ اے لاہور کے سینئر رئیل اسٹیٹ ایجنٹس کا شرح سود میں اضافے پر شدید ردعمل۔ڈی ایچ اے اسٹیٹ ایجنٹس ایسوسی ایشن لاہور کے صدر میاں طلعت احمد، چیئرمین ڈاکٹر خالد چودھری پیٹرن انچیف میاں عرفان جنرل، سیکرٹری سرفراز حسین، سابق سیکرٹری حاجی زاہد حسین،این زیڈ مارکیٹنگ کے ملک نصیر احمد، ملٹری اسٹیٹ کے اظہار جی ایم اعوان، این زیڈ گروپ افتخار احمد گورایہ، فرینڈز بزنس گروپ کے ارشد نجمی،سابق فنانس سیکرٹری ذوالفقار حسین، غنی مارکیٹنگ کے نواز غنی نے زرمبادلہ میں تیزی سے ہونے والی کمی پر اظہار تشویش کرتے ہوئے ملکی معیشت کو سہارا دینے کے لئے رئیل اسٹیٹ سیکٹر اور اس سے منسلک صنعتوں کو ٹیکس فری کرنے کا مطالبہ کیا، پاکستان سے سرمایہ کی بیرون ملک منتقلی پر حکومتی خاموشی کی مذمت کی۔صدر میاں طلعت احمد نے شرح سود کو 16فیصد کرنے کے عمل کو حکومت کی دوعملی قرار دیا۔چیئرمین ڈاکٹر خالد چودھری نے حکومت کی طرف سے رئیل اسٹیٹ سیکٹر کو نظر انداز کرنے اور بے تحاشا ٹیکسز مسلط کرنے کی مذمت کی۔ پیٹرن انچیف میاں عرفان نے سرمایہ کاری لانے کے لئے اوو ر سیز پاکستانیوں کے لئے خصوصی پیکیج دینے کا مطالبہ کیا۔ جنرل سیکرٹری سرفراز حسین،سابق سیکرٹری حاجی زاہد حسین، سابق نائب صدر ارشد کھوکھر نے بھی مذمت کی۔ افتخار حسین گورایہ، ملک نصیر، اظہر جی ایم اعوان، افتخار حسین گورایہ، ارشد نجمی، ذوالفقار حسن، نواز غنی نے کہا کہ وقت آ گیا ہے کہ حکومت سنجیدگی کا مظاہرہ کرے اور ملکی معیشت کی مضبوطی کے لئے رئیل اسٹیٹ سیکٹر کو ہدف بنائے۔