پی ٹی آئی کامزید مشاورت،چوہدری پرویز الٰہی،مونس الٰہی کو اعتماد میں لینے پر اتفاق 

 پی ٹی آئی کامزید مشاورت،چوہدری پرویز الٰہی،مونس الٰہی کو اعتماد میں لینے ...

  IOS Dailypakistan app Android Dailypakistan app


 لاہور(نمائندہ خصوصی) پاکستان تحریک انصاف کے اجلاس کی اندرونی کہانی سامنے آگئی، چیئرمین پی ٹی آئی عمران کی زیرصدارت مشاورتی اجلاس میں بابر اعوان اور بیرسٹر علی ظفر نے اسمبلیاں تحلیل ہونے کی صورت میں آئینی و قانونی پہلوؤں سے آگاہ کیااور رائے دی کہ اسمبلیوں سے مستعفی ہوتے ہیں تو امپورٹڈ حکومت مسلط ہوجائیگی، اسمبلیاں تحلیل ہوتی ہیں تو نگران سیٹ اپ تک موجودہ وزیراعلیٰ ہی رہیں گے، حکومت اور اپوزیشن کے درمیان نگران سیٹ اپ پر اتفاق نہ ہوا تو الیکشن کمیشن فیصلہ کریگا۔قانونی ماہرین نے خدشہ ظاہر کیا کہ نگران سیٹ اپ کا اختیار الیکشن کمیشن کو ملنے سے فائدہ پی ڈی ایم کو ہوگا۔ذرائع کے مطابق مشاورتی اجلاس میں پارٹی کی اکثریت نے مستعفی ہونے کی بجائے اسمبلیاں تحلیل کرنے کی تجویز دیدی۔اسمبلیاں تحلیل ہونے سے امپورٹڈ حکومت کو ہر صورت عام انتخابات کروانا پڑیں گے۔مشاورتی اجلاس میں اسمبلیاں تحلیل کرنے یا مستعفی ہونے کا اختیار پارٹی چیئرمین عمران خان کو دیدیا۔وزیراعلی کے پی کے نے کہا پارٹی چیئرمین جو فیصلہ کریں گے اس پر من و عن عمل ہوگا۔ذرائع کے مطابق عمران خان نے موجودہ صورتحال پر مزید مشاورت کا فیصلہ کیا، جبکہ فیصلے سے قبل وزیراعلی پنجاب چوہدری پرویز الٰہی اور مونس الہی کو بھی اعتماد میں لینے پر اتفاق کیا گیا۔
پی ٹی آئی اتفاق

مزید :

صفحہ اول -