بدانتظامی سے کسانوں کی زندگی اجیرن ہوچکی ہے،مولانا صالح اندھڑ 

بدانتظامی سے کسانوں کی زندگی اجیرن ہوچکی ہے،مولانا صالح اندھڑ 

  IOS Dailypakistan app Android Dailypakistan app


سکھر (ڈسٹرکٹ رپورٹر)جمعیت علماء اسلام ضلع کے سیکرٹری جنرل مولانا محمد صالح انڈھڑ سندھ بھر  بالخصوص ضلع سکھر میں یوریا / کھاد کی قلت کو ایگریکلچرل ڈپارٹمنٹ سمیت تمام حکام و افسران کی ملی بھگت سے میگا کرپشن قرار دیتے ہوئے اسے کسانوں پر خودکش حملے سے تعبیر کیا ہے ان خیالات کا اظہار انہوں نے ضلع بھرسے مختلف علاقوں سے ملنے والے کسانوں اور آبادگاروں کے وفود سے مرکز باب الاسلام سکھر میں ملاقات کے دوران کیا ضلعی پریس ترجمان قاری لیاقت علی مغل کے جاری کردہ بیان میں مولانا محمد صالح انڈھڑ نے مزید کہا کہ پتہ نہیں کہ وہ کون سا کارنامہ سندھ کے حکمران اور کب انجام دیں گے جس میں کرپشن نا ہو، انہوں نے کہا کہ سندھ میں حالیہ تباھ کن بارشوں اور بدانتظامی کیوجہ سے پہلے ہی کسان کی زندگی اجیرن ہوچکی ہے، دووقت کا کھاناو علاج بھی مشکل ہوگیا ہے، ان حالات میں اچھی حکمرانی کا تو فرض اول تھاکہ زراعت کو مکمل بحال کرنے کیلئے سندھ بھر سے زمینوں میں کھڑا ہوا پانی نکال کر کسانوں کو بڑا رلیف پیکیج دیا جاتا جبکہ انتہائی افسوس کیساتھ کہنا پڑتا ہے کہ کھاد کی قلت کا بحران پیدا کردیاگیا، مولانا محمد صالح انڈھڑ نے کہا کہ بھلا یہ سب بحران سندھ میں ہی کیوں پیداہورہے ہیں یہ سندھ حکومت کیلئے سوالیہ نشان ہے، انہوں نے کہا کہ اب وقت آگیا ہے کہ عوام ان بحران پیدا کرنے والے نااھل کرپٹ حکمران و افسران کا گھیراؤ کرنے کے لیے میدان عمل میں آجائیں،یہ کرپٹ اقلیتی ٹولہ ہمیشہ اکثریتی غریب عوام پر ڈاکے ڈال کر عادی مجرم بن چکے ہیں، کھاد کے خودساختہ بحران کو ختم نہیں کیا گیا تو بھت بڑا عوامی ردعمل دیں گے جس کے ذمہ داری حکومتی حکمران اور نااہل انتظامیہ پر عائد ہوگی مولانا محمد صالح انڈھڑ نے اپنے بیان میں سندھ بھر کے انسان دوست فریقین سے سندھ کے کسانوں کے ساتھ ہمدردی اور حمایت کرنے کی بھی اپیل کی ہے۔