عمران خان گولیاں کھا کر بھی عوام کے درمیان موجود ہیں جبکہ مفرور لیڈر اٹلی کی سیر کر رہا ہے،مسرت جمشید چیمہ

عمران خان گولیاں کھا کر بھی عوام کے درمیان موجود ہیں جبکہ مفرور لیڈر اٹلی کی ...
عمران خان گولیاں کھا کر بھی عوام کے درمیان موجود ہیں جبکہ مفرور لیڈر اٹلی کی سیر کر رہا ہے،مسرت جمشید چیمہ

  IOS Dailypakistan app Android Dailypakistan app

لاہور(نمائندہ خصوصی،لیڈی رپورٹر)گورنر راج کوئی مذاق نہیں، 12 کروڑ عوام ان کا جو حشر کریں گے یہ یاد رکھیں گے۔ تحریک انصاف کا ایک ہی مطالبہ ہے کہ انتخابات کی تاریخ فوری دی جائے۔ عمران خان گولیاں کھا کر بھی عوام کے درمیان موجود ہیں جبکہ ان کا مفرور لیڈر لندن سے فرار ہو کر اٹلی کی سیر کر رہا ہے۔ ایک شخص 3 سال قبل دوائی لینے گیا تھا اسے ابھی تک دوائی نہیں ملی۔ان خیالات کا اظہار ترجمان وزیر اعلیٰ و حکومت پنجاب مسرت جمشید چیمہ نے رہنما تحریک انصاف سینیٹر اعجاز چوہدری کے ہمراہ سپریم کورٹ رجسٹری کے باہر میڈیا سے گفتگو کرتے ہوئے کیا۔ انہوں نے کہا کہ چیئرمین پی ٹی آئی عمران خان پر قاتلانہ حملے کی ایف آئی آر سے متعلق کہا گیا کہ ایک سے زیادہ مقدمات درج نہیں ہو سکتے۔ جس شخص کا پاکستان میں سب سے زیادہ ووٹ بنک ہے وہ اپنے اوپر قاتلانہ حملے کا مقدمہ درج نہیں کروا سکتا۔ ہمارا سوال یہی ہے کہ سینیٹر اعظم سواتی پر پھر ایک کیس کی درجنوں ایف آئی ار کیوں درج کی گئی ہیں۔ انہوں نے کہا کہ ارشد شریف کا قتل ہم سب پر قرض ہے اور یہ قرض ہم ادا کریں گے۔ مسرت جمشید نے کہا اشتہاری حکومت کے زیر قبضہ صرف 27 کلومیٹر کا علاقہ ہے جو آئندہ الیکشن میں پاکستان سے 27 سیٹیں بھی نہیں جیت سکے گی۔ یہ حکومت بیساکھیوں پر لائی گئی تھی اور اب انکے پاس بیساکھیاں بھی نہیں رہیں۔ عوام نے انکی سیاسی موت لکھ دی ہے۔ اپنی سیاسی موت دیکھ کر یہ لوگ جگہ جگہ ٹکریں مارتے پھر رہے ہیں۔  مسرت جمشید چیمہ نے کہا ہے کہ پاکستان میں کنٹرولڈ میڈیا کی وجہ سے آئین کی حکمرانی کا خواب ادھورا ہے۔ وہ پنجاب یونیورسٹی سکول آف کمیونیکیشن سٹڈیز کے شعبہ کمیونیکیشن اینڈ میڈیا ریسرچ کے زیر اہتمام مولانا ظفر علی خان چیئر اور پی یو ویب ٹی وی کے اشتراک سے ’سماجی و سیاسی ترقی میں میڈیا کے کردا ر‘پر کھرانہ آڈیٹوریم سکول آف کیمسٹری میں منعقدہ سیمینار سے خطاب کر رہی تھیں۔ اس موقع پرڈین فیکلٹی آف انفارمیشن اینڈ میڈیا سٹڈیز پروفیسر ڈاکٹر خالد محمود، ا ڈائریکٹر سکول آف کمیونیکیشن سٹڈیز پروفیسر ڈاکٹر نوشینہ سلیم، تجزیہ کار اوریا مقبول جان، ایگزیکٹیو ایڈیٹر ترکیہ اردو محمد حسان، پروفیسر ڈاکٹر میاں حنان احمد،سینئر فیکلٹی ممبران اور طلباؤطالبات نے بڑی تعداد میں شرکت کی۔ اپنے خطاب میں مسرت جمشید چیمہ نے کہا کہ بدقسمتی سے پاکستان میں میڈیا کاکردارتعمیری سے زیادہ تنقیدی ہے۔ نوجوانوں کی وجہ سے سوشل میڈیا پلیٹ فارمز پر پراپیگنڈہ وار کا بھرپور مقابلہ کر رہے ہیں۔  سوشل میڈیا کی بدولت پاکستان کا مثبت کردار دنیا کے سامنے لانے میں مدد ملی ہے۔تقریب سے خطب میں  اوریا مقبول جان نے کہا کہ دنیا بھر میں 97فیصد میڈیا پر5کمپنیوں کا راج ہے جو میڈیا کو استعمال کرکے اپنا ایجنڈا نا فذ کرتے ہیں۔