لاپتہ بلوچ نوجوان کی بہن اسلام آباد ہائیکورٹ میں پیش، جذبات پر قابو نہ رکھ سکیں، آنسو رواں ، عدالت کا نگران وزیراعظم پر مقدمے کا عندیہ

لاپتہ بلوچ نوجوان کی بہن اسلام آباد ہائیکورٹ میں پیش، جذبات پر قابو نہ رکھ ...
لاپتہ بلوچ نوجوان کی بہن اسلام آباد ہائیکورٹ میں پیش، جذبات پر قابو نہ رکھ سکیں، آنسو رواں ، عدالت کا نگران وزیراعظم پر مقدمے کا عندیہ

  IOS Dailypakistan app Android Dailypakistan app

اسلام آباد (ڈیلی پاکستان آن لائن) اسلام آباد ہائیکورٹ میں لاپتہ بلوچ نوجوان کی بہن اسلام آباد ہائیکورٹ میں پیش ہو گئیں، جذبات پر قابو نہ رکھ سکیں اور آنسو بہہ نکلے۔ عدالت نے نگران وزیر داخلہ کو مخاطب کر کے سخت ریمارکس دیتے ہوئے کہا کہ ان پر اور  نگران وزیراعظم پر  عدام بازیابی کی صور ت میں مقدمہ  درج کرنے کا حکم دیدیا جائے گا۔

 نجی ٹی وی جیو نیوز کے مطابق اسلام آباد ہائیکورٹ میں بلوچ طلبا بازیابی کمیشن کی سفارشات پر عملدرآمد کے کیس میں نگران وزیر داخلہ و وزیر انسانی حقوق پیش ہوئے۔ اٹارنی جنرل نے عدالت کو آگاہ کیا کہ نگران وزیراعظم بیرون ملک ہونے کے سبب پیش نہیں ہو سکے۔ بلوچ طلبا کو بازیاب کروا لیا گیا، وہ گھر پہنچ چکے۔ 28 بلوچ لاپتہ افراد ابھی بھی بازیاب نہیں ہوئے۔

دوران سماعت لاپتہ بلوچ نوجوان کی بہن عدالت میں جذبات پر قابو نہ رکھ سکیں اور ان کے آنسو بہہ نکلے۔ بیان میں کہا کہ آصف بلوچ اور کزن رشید بلوچ کو 2018 میں گرفتار کیا گیا، آج 6 سال ہو گئے ان کو کسی عدالت میں پیش نہیں کیا گیا۔ ہمارا سارا گھر ختم ہو گیا، 6 سال سے دھکے کھا رہے ہیں۔ 

جسٹس محسن اختر کیانی نے استفسار کیا کہ اس بچی کے سوالات کا جواب کسی کے پاس ہے؟ انہوں نے نگران وزیر داخلہ سرفراز بگٹی سے مکالمہ کرتے ہوئے سخت ریمارکس میں  کہاکہ یہ لاپتہ افراد بازیاب نہ ہوئے تو آپ اور نگران وزیراعظم پر ایف آئی آر درج کرنے کا حکم دوں گا۔

مزید :

قومی -