پی ایم آئی سی کے قیام کی افتتاحی تقریب کا انعقاد

پی ایم آئی سی کے قیام کی افتتاحی تقریب کا انعقاد

کراچی (اکنامک رپورٹر)پاکستان مائیکروفنانس انویسٹمنٹ کمپنی لمیٹڈ (PMIC)کی افتتاحی تقریب گزشتہ روز پرائم منسٹر آفس میں منعقد ہوئی۔ پی ایم آئی سی خصوصی طور پر منافع بخش ہول سیل مالیاتی ادارہ ہے جس کا پاکستان میں قیام کا مقصد مائیکروفنانس میں وسعت لانا ہے۔ یہ تجارتی ترقی کے لئے نجی طور پر چلایا جانے والا پہلا سرکاری ادارہ ہے جو ملک بھر میں مائیکروفنانس کی ترقی کی رفتار میں تیزی لانے کے لئے مختص ہے۔ یہ ادارہ گزشتہ 15 سال سے زائد عرصے سے کام کرنے والے ادارے پاکستان پاورٹی ایلی ویشن فنڈ کے مضبوط پلیٹ فارم کو بنیاد بنائے گا اور بہتر سرمائے کے حامل منافع بخش ہول سیل فنانس کاروبار کے قیام کے ساتھ مائیکروفنانس کے اداروں کو کمرشل کریڈٹ اور کیپٹل مارکیٹس کے ساتھ ریٹیل کو پائیدار فنڈنگ مہیا کریگا ۔ اس ادارے کے کردار کے مطابق کہ مالیاتی ریٹیل مائیکروفنانس بینکوں اور مائیکروفنانس کے منافع بخش اور غیرمنافع بخش اداروں کو پاکستان میں وسیع پیمانے پر ذریعہ معاش اور ملازمتوں کے مواقع میں تعاون فراہم کریگا ۔ یہ ادارے اپنے مینڈیٹ کے تحت قرضوں اور سرمایہ کاری پر مبنی دیگر خدمات فراہم کرے گا تاکہ مائیکروفنانس کے ادارے ریٹیل میں حصص کی مالیت سے منسلک سرمایہ کاری کرسکیں۔ یہ ادارہ مائیکروفنانس کے ریٹیل اداروں کو ادارہ جاتی استحکام میں تعاون کے لئے تکنیکی معاونت بھی فراہم کرے گا تاکہ وہ بڑے پیمانے پرانتظام چلا سکیں ۔ پی ایم آئی سی کمپنیز آرڈیننس کے تحت پبلک لمیٹڈ کمپنی کے طور پر سیکورٹیز اینڈ ایکسچینج کمیشن آف پاکستان میں رجسٹرڈ ہے۔ یہ ادارہ حکومت پاکستان کے قومی فنانشل انکلوشن اسٹریٹجی (این ایف آئی ایس) کا حصہ ہے جس کا آغاز مئی 2015میں ہوا ۔ قومی سطح پر یہ بنیادی پالیسی تیار کی گئی ہے تاکہ چھوٹے تاجروں اور چھوٹے اداروں کی مالیاتی سہولیات تک بھرپور رسائی کو فروغ دیا جائے۔ یہ ادارہ پاکستان پاورٹی ایلی ویشن فنڈ (پی پی اے ایف)، کارانداز پاکستان ، برطانوی حکومت کے محکمہ بین الاقوامی ترقی (DFID) اورجرمنی کے سرکاری ترقیاتی بینک کے ایف ڈبلیو (KfW)کی جانب سے قائم کیا گیا ہے۔ پی پی اے ایف مائیکروفنانس کے شعبے میں فنڈ فراہم کرنے والا صف اول کا غیرمنافع بخش ادارہ ہے۔ کارانداز پاکستان ایک غیرمنافع بخش کمپنی ہے تاکہ چھوٹے کاروبار کو قرضوں اور ڈیجیٹل مالیاتی خدمات کی فراہمی میں تعاون کیا جائے ۔ اس ضمن میں برطانیہ کے محکمہ بین الاقوامی ترقی (DFID) اور جرمنی کے سرکاری ترقیاتی بینک کے ایف ڈبلیو (KfW)فنڈز فراہم کریں گے۔ اس موقع پر برطانیہ کے ہائی کمشنر تھامس ڈریو ، جرمنی کی سفیر اینا لاپیل ، برطانیہ کے محکمہ بین الاقوامی ترقی (DFID) کی پاکستان ہیڈ آفس کی سربراہ جوانا ریڈ ، کے ایف ڈبلیو (KfW)کے والفونگ مولرز ، اور پی ایم آئی سی بورڈ آف ڈائریکٹرز کے چیئرمین زبیر سومرو نے بھی تقریب سے خطاب کیا۔ پی پی اے ایف کے سی ای او قاضی عظمت عیسیٰ نے خطاب کرتے ہوئے کہا، 'پاکستان میں مالیاتی سہولت کے لئے پی ایم آئی سی ایک انقلابی تبدیلی ہے۔ پی پی اے ایف مائیکروفنانس سیکٹر کی ترقی کا مکمل حصہ ہے اور پی ایم آئی سی اس شعبے کو ترقی کے اگلے مرحلے میں لے جائے گا ۔ اجتماعی ترقی کے حصول کے لئے مالیاتی شمولیت بہت اہم ہے اور پائیدار معاشی ترقی کی بنیادی شرط ہے جس سے عدم مساوات میں کمی اور غربت کا خاتمہ ہوتا ہے۔ پی ایم آئی سی ان بنیادوں پر تعمیر ہوگا جس طرح پی پی اے ایف 15 سال پہلے قائم ہوا اور اب وہ پاکستان کے کروڑوں افراد کو ذمہ داری کے ساتھ مالیاتی خدمات فراہم کررہا ہے۔ '

مزید : پشاورصفحہ آخر