کوئٹہ سے شہدا کی میتیں ویگنوں میں کیو ں بھجوائی گئیں ؟اصل حقیقت سامنے آگئی،لاشوں پر سیاست کرنے والوں کو زور دار جھٹکا لگ گیا

کوئٹہ سے شہدا کی میتیں ویگنوں میں کیو ں بھجوائی گئیں ؟اصل حقیقت سامنے ...
کوئٹہ سے شہدا کی میتیں ویگنوں میں کیو ں بھجوائی گئیں ؟اصل حقیقت سامنے آگئی،لاشوں پر سیاست کرنے والوں کو زور دار جھٹکا لگ گیا

  

کوئٹہ (مانیٹرنگ ڈیسک )بلوچستان کے صوبائی وزیر صحت رحمت اللہ بلوچ نے کہا ہے کہ شہدا کی میتوں کو آبائی علاقوں میں بھیجنے کے لیے C-130ہیلی کاپٹرز اور بڑی تعداد میں ایمبو لینسز فراہم کی گئی تھیں لیکن کچھ شہدا کے ورثا نے اس بات پر اسرار کیا کہ انہیں ویگن فراہم کی جائے تاکہ وہ آسانی کے ساتھ میتوں کے ہمراہ اپنے آبائی علاقوں میں جا سکیں ۔

کوئٹہ میں فورسز کی کارروائی،پولیس کے تربیتی مرکز پر حملے میں ملوث کالعدم لشکری جھنگو ی کے 4دہشتگرد ہلاک

ترجمان بلوچستان حکومت انوار الحق کاکڑ کے ہمراہ پریس کانفرنس کرتے ہوئے رحمت اللہ بلوچ کا کہنا تھا کہ کچھ لوگ سانحہ کوئٹہ پر منفی پروپیگنڈا کر کے سیاست چمکا رہے ہیں جس سے قومی مفاد کو شدید نقصان پہنچا ہے۔انہوں نے کہا کہ مفاد پرست عناصر اپنی گرتی ہوئی ساکھ بچانے کے لیے لاشوں پر سیاست کر رہے ہیں ،بلوچستان حکومت کے خلاف شہدائے پولیس ٹریننگ کالج ہاسٹل کی میتوں کو ویگنوں کی چھت پر رکھ کر آبائی علاقوں میں پہنچانے کی بات محض منفی پروپیگنڈا ہے ۔ان کا کہنا تھا کہ سانحہ کوئٹہ کے شہدا ہمارے قومی ہیروز ہیں ،ان کی تمام تر ذمے داریاں ہم پر ہیں ،سانحہ کوئٹہ کے بعد تمام اداروں نے اپنی ذمہ داری کو بخوبی نبھایا۔

صوبائی وزیر صحت نے کہا کہ میڈ یا پر بھی شہدا کی میتوں سے متعلق غیر تصدیق شدہ معلومات نشر کی گئیں ،اس بات کو واضح کرنا چاہتا ہوں کہ میتوں کو ان کے ورثا کے اسرار پر ویگنوں میں لے جا یا گیا ۔انہوں نے کہا کہ سانحہ کوئٹہ میں سیکیورٹی میں جتنی بھی خامیاں تھیں انہیں ملحوض خاطر رکھ کر اقدامات کیے جا رہے ہیں ،پولیس ٹریننگ کالج ہاسٹل کی دیوار نہ بننے کا پروپیگنڈا کرنے والوں کو یہ بتانا چاہتے ہیں کہ سرکاری کام کے قواعد و ضوابط ہوتے ہیں ،ہر منصوبہ مختلف مرحلوں سے ہوتا ہوا اپنے منطقی انجام پر پہنچتا ہے۔

مزید : کوئٹہ