’میرے والد ایک مرتبہ 35ائیرہوسٹسز کو اپنی رہائش گاہ پر لے آئے اور پھر۔۔۔‘

’میرے والد ایک مرتبہ 35ائیرہوسٹسز کو اپنی رہائش گاہ پر لے آئے اور پھر۔۔۔‘
’میرے والد ایک مرتبہ 35ائیرہوسٹسز کو اپنی رہائش گاہ پر لے آئے اور پھر۔۔۔‘

  

لندن (نیوز ڈیسک) فارمولا ون ریسنگ کے شہرہ آفاق برطانوی چیمپیئن جیمز ہنٹ کی زندگی کے شرمناک قصے پہلے بھی بہت مشہور تھے لیکن ایک نئی کتاب میں ان کے بیٹے فریڈی جیمز نے ایک ایسا قصہ بیان کر دیا ہے کہ جسے بے حیائی کی ناقابل یقین داستان قرار دیا جاسکتا ہے۔

ا خبار دی میٹرو کی رپورٹ کے مطابق فریڈی اور ان کے چھوٹے بھائی ٹام نے اپنے والد کی زندگی کے متعلق ایک نئی کتاب شائع کی ہے۔ اس کتاب میں جیمز کی زندگی کے متعلق جہاں کئی اور خفیہ باتوں سے پردہ اٹھایا گیا ہے وہیں جاپان کے ٹوکیو ہلٹن ہوٹل میں 35 ائیرہوسٹسوں کے ساتھ ان کی بے حیائی کا شرمناک قصہ بھی شامل ہے۔

وہ آدمی جس کے 210 ارب روپے چوہے کھاگئے

فریڈی کا کہنا ہے کہ ان کے والد 1976ء کی جاپانی گراں پری چیمپیئن شپ کے سلسلہ میں اس ہوٹل میں مقیم تھے۔ اتفاق سے برٹش ائیرویز بھی اسی ہوٹل کو اپنے عملے کے عارضی قیام کے لئے استعمال کرتی تھی۔ برٹش ائیرویز کی ائیرہوسٹسوں کو جب جیمز ہنٹ کی اس ہوٹل میں موجودگی کا علم ہوا تو ان کی خوشی کی انتہا نہ رہی۔ فریڈی کا کہنا ہے کہ برٹش ائیرویز کی جو بھی پرواز ٹوکیو آتی اس کی ائیرہوسٹسیں اپنے کمروں میں جانے کی بجائے سیدھی جیمز ہنٹ کے کمرے میں چلی جاتی تھیں، جس کا مقصد عالمی شہرت یافتہ ہیرو کے ساتھ جسمانی قربت کا خواب پورا کرنا تھا۔ فریڈی کا کہنا ہے کہ ان کے والد کے ٹوکیو ہلٹن ہوٹل میں چند روزہ قیام کے دوران برٹش ائیرویز کی مختلف پروازوں پر فرائض سرانجام دینے والی 35 ائیرہوسٹسوں نے ان کے ساتھ شب بسری کی۔

فریڈی کا کہنا ہے کہ انہیں اس واقعے کی صداقت پر کوئی شک نہیں ہے کیونکہ اس کے متعدد گواہ بھی موجود ہیں، تاہم انہوں نے اپنے والد کے اس دعوے پر شکوک و شبہات کا اظہار کیا کہ انہوں نے اپنی رنگین زندگی کے دوران کل 5ہزار سے زائد خواتین کے ساتھ تعلق استوار کیا۔

مزید : ڈیلی بائیٹس