پنجاب میں خواتین پر تشدد کیخلاف خصوصی عدالتیں قائم کرنے کا فیصلہ

لاہور( این این آئی)پنجاب حکومت نے خواتین کے خلاف ہونے والے جرائم کے سد باب کے لیے صوبے میں خصوصی عدالتیں قائم کرنے کا فیصلہ کر لیا ، ان عدالتوں میں صرف خواتین جج مقرر کی جائیں گی اور وہ ہی خواتین کے خلاف جرائم کے مقدمات سنیں گی۔مذکورہ عدالتیں صوبے کے 36 اضلاع میں خواتین کے لیے قائم کیے جانے والے عدم تشدد کے مراکز میں قائم کی جائیں گی۔ خصوصی اصلاحاتی کمیٹی کے سربراہ سلمان صوفی نے بی بی سی کو بتایا کہ اگلے دو ماہ کے اندر ان خصوصی عدالتوں کا قیام ممکن ہو پائے گا۔ 2016کے قانون میں ترامیم کا مسودہ تیار کیا جا رہا ہے اور اسے رواں سال دسمبر میں منظوری کے لیے پنجاب اسمبلی میں پیش کر دیا جائے گا۔انہوں نے بتایا کہ پہلے مرحلہ میں خصوصی عدالت ملتان ،دوسرے مرحلے میں لاہور، گوجرانوالہ اور فیصل آباد میں قائم کی جائیں گی۔جس دن شکایت موصول ہو گی اسی روز عدالتی کارروائی کا آغاز بھی ممکن ہو پائے گا۔ اس طرح مقدموں کا جلد نمٹانا بھی ممکن ہو گا۔ مقدمات کے فیصلے دو ہفتے کے اندر کرنے بھی ممکن ہوں گے۔
خصوصی عدالتیں

مزید : علاقائی

لائیو ٹی وی نشریات دیکھنے کے لیے ویب سائٹ پر ”لائیو ٹی وی “ کے آپشن یا یہاں کلک کریں۔


loading...