اعلیٰ عدلیہ کو نشانہ بنانا نواز شریف اور پارٹی کے حق میں نہیں:چودھری نثار

اعلیٰ عدلیہ کو نشانہ بنانا نواز شریف اور پارٹی کے حق میں نہیں:چودھری نثار

راولپنڈی (آئی این پی) سابق وزیر دخلہ اور پاکستان مسلم لیگ (ن) کے رہنماء چوہدری نثار علی خان نے کہا کہ شیخ رشید کسی غلط فہمی میں نہ رہیں وہ ان کے مشرف اور دیگر ادوار کے سیاسی اوراق کھول سکتا ہوں، اعلیٰ عدلیہ کو نشانہ بنانا نواز شریف اور پارٹی کے حق میں نہیں ہے، دیگر ریاستی اداروں پر تنقید غیر ضروری ہے، نواز شریف اور میں نے پارٹی کی ایک ایک اینٹ خود رکھی تھی، آج پارٹی کی اینٹیں لگانے والوں میں کوئی نہیں ہے،اسمبلی میں گونگا، بہرہ ہو کر نہیں بیٹھتا، ڈنکے کی چوٹ پر بات کرتا ہوں،منفی سوچ کا میں کچھ نہیں کر سکتا،مخالفین کو اپنی سیاست پر توجہ دینی چاہیے،حلقے کے لوگوں سے کہتا ہوں کہ حلقے کا مقابلہ پورے ملک میں کسی وزیر، گورنر، وزیراعلیٰ کے حلقے سے کرلیں، اگر آپ کا حلقہ سرفہرست نہ ہو تو مجھے ووٹ نہ دیں،کوئی ایسا کام نہیں کیا، جس سے سر جھک جائے۔وہ ہفتہ کو ساگری میں عوامی اجتماع سے خطاب کررہے تھے۔ چوہدری نثار علی خان نے کہا کہ نواز شریف اور میں نے پارٹی کی ایک ایک اینٹ رکھی تھی، آج پارٹی کی اینٹیں لگانے والوں میں کوئی نہیں ہے، وزارت اس لئے واپس نہیں کی تھی کہ شدید اختلاف تھا، اعلیٰ عدالتوں پر تنقید کی پالیسی سے اختلاف ہے، اعلیٰ عدلیہ کو نشانہ بنانا نواز شریف اور پارٹی کے حق میں نہیں ہے۔ انہوں نے کہا کہ دیگر ریاستی اداروں پر تنقید غیر ضروری ہے،الیکشن میں سات مہینے باقی ہیں، ان ساڑھے چار سالوں میں جو میں نے کام کئے وہ آپ کے سامنے ہیں، میں وضاحت نہیں کرنا چاہتا، اس سے قبل ایم این ایز سے موازنہ کرلیں آپ کو فرق نظر آ جائے گا۔ انہوں نے کہا کہ میں اپنے حلقے کے لوگوں سے کہتا ہوں کہ اس حلقے کا مقابلہ پورے ملک میں کسی وزیر، گورنر، وزیراعلیٰ کے حلقے سے کرلیں، اگر آپ کا حلقہ سرفہرست نہ ہو تو مجھے ووٹ نہ دیں، میں نے ہر وہ چیز کی جس سے میرے حلقے کے لوگوں کا سر فخر سے بلند ہوا، کوئی ایسا کام نہیں کیا، جس سے سر جھک جائے، میں نے روایت ڈالی ہے کہ سب لوگوں کو فنڈز دیتا ہوں، حتیٰ کہ مخالفین کے کام بھی کرتا ہوں، جس پر میرے دوست بھی ناراض ہوتے ہیں، اللہ تعالیٰ مجھے توفیق دے کہ میں اور عوام کی بھلائی کے کام کرتا رہوں، میں اللہ کے سامنے جوابدہ ہوں،منفی سوچ کا میں کچھ نہیں کر سکتا۔ انہوں نے کہا کہ عوام دو نمبر لوگوں کو ووٹ نہ دیں،میں وہ واحد شخص ہوں جس نے بڑی وزارت لینے سے خود انکار کیا، میں نے اپنی پارٹی کے اندر اختلاف رائے کیا، وزارت لے کر بھی اختلاف رائے کر سکتا تھا لیکن میں نے وزارت ٹھکرا کر اختلاف رائے کیا، یہاں پر سیاست نہیں کی جاتی بلکہ الزامات لگائے جاتے ہیں، گزشتہ روز ایک شخص کی تقریر سن کر شرمندگی ہوئی، مخالفین کو اپنی سیاست پر توجہ دینی چاہیے۔ انہوں نے کہا کہ نواز شریف کے خلاف مقدمات سپریم کورٹ میں ہیں، دائرے میں رہ کر عدالتی فیصلے پر تنقید کی جا سکتی ہے، اعلیٰ عدلیہ کی تضحیک کا کیا نتیجہ نکلے گا؟چوہدری نثار علی خان نے کہا کہ اسمبلی میں گونگا، بہرہ ہو کر نہیں بیٹھتا، ڈنکے کی چوٹ پر بات کرتا ہوں۔انہوں نے کہا کہ مشکل وقت میں میرے سامنے کیا کچھ نہیں رکھا گیا، اپنی حکومت میں مجھے وزیر بننے کی آفر ہوئی لیکن ٹھکرا دی، پارٹی کو غلط راستے پر لے جایا جارہا ہے، اس لئے اختلاف رائے کیا، اب سیاست سیاست نہیں رہی بازی گری شروع ہو چکی ہے۔ انہوں نے کہا شیخ رشید اپنی سیاست کریں، مجھے میری کرنے دیں۔چوہدری نثار نے کہا کہ شیخ رشید کسی غلط فہمی میں نہ رہیں، میں ان کے مشرف اور دیگر ادوار کے سیاسی اوراق کھول سکتا ہوں۔

چودھری نثار

مزید : کراچی صفحہ اول