ملک میں صدارتی نظام نافذ کیا جائے: جعفر اقبال

ملک میں صدارتی نظام نافذ کیا جائے: جعفر اقبال

خان پور(نمائندہ خصوصی)مسلم لیگ (ن) کے مرکزی رہنما وسنیٹر چوہدری جعفر(بقیہ نمبر21صفحہ12پر )

اقبال نے کہا ہے کہ پچھلے 35برسوں سے یہ کہتا آرہاہوں کہ ہمارے ملک میں پارلیمانی نظام کامیاب نہیں اگر ملک کو درست سمت پر لاکر خوشحال دیکھنا چاہتے ہیں تو ملک میں صدارتی نظام رائج کیا جائے لیکن اس پر آج تک عملدر آمد کا نہ ہونا ملکی تباہی کاسبب بن رہا ہے۔وہ ایم این اے شیخ فیاض الدین کی رہائش گاہ پر انکے بھائی شیخ ریاض الدین کی وفات پر ان سے اظہار تعزیت کرنے کے بعد میڈیا سے گفتگو کررہے تھے۔انہوں نے مزید کہا کہ پارلیمانی نظام در اصل افسردہ نظام ہے اس نظام نے وطن عزیز کے چپے چپے کو مایوس کردیا ہے،کرپشن نے تو ملکی سالمیت کی چمڑی ادھیڑ لی ہے حتٰی کہ سرکاری محکموں میں تنخواہ پر کوئی ملازم کام کرنے کیلئے تیار تک نہیں ،تمام افسران واہلکار سائلین کے آگے کاسا پھیلائے ہوئے ہیں،انہوں نے کہا کہ اگر ہم نے اس نظام کی جان نہ چھوڑی توایک دن ایسا ممکن ہے کہ ملک کے 60فیصد نوجوان سول نا فرمانی پر مجبور ہوکر ملک میں دنگا فساد شروع کردیں گے اور یہاں خون خرابہ ہوگا جو وطن عزیز میں امن وسلامتی کیلئے خطرے کی گھنٹی ہوگی۔انہوں نے کہا کہ جس ملک کے دارالخلافہ کے ہسپتالوں میں علاج معالجہ کی سہولیات نہ ہوں اس ملک کے نظام کو کامیاب نہیں کہا جاسکتا ،افسوسناک بات یہ ہے کہ ایم این اے نجم سیال ان ہسپتالوں میں ایمر جنسی کی حالت میں گئے تو وہاں دوائی اور مشینری تک نہیں تھی ۔انہوں نے کہا کہ اس نظام کو سدھارنے کیلئے حکومت جتنے بھی انجکشن لگالے یا انٹی بیٹک استعمال کرلے لیکن اب نظام کا سدھرنا نا ممکن ہوکر رہ گیا ہے۔انہوں نے کہا کہ یونین کونسل کی سطح پر بلدیات کو مضبوط کرنے سے بھی علاقائی محرومیوں کا خاتمہ ممکن ہوسکتا ہے۔

مزید : عالمی منظر

لائیو ٹی وی نشریات دیکھنے کے لیے ویب سائٹ پر ”لائیو ٹی وی “ کے آپشن یا یہاں کلک کریں۔


loading...