کالا باغ ڈیم سمیت 11منصوبوں پر ابتدائی کام مکمل، 19727 میگا واٹ بجلی حاصل ہوگی

کالا باغ ڈیم سمیت 11منصوبوں پر ابتدائی کام مکمل، 19727 میگا واٹ بجلی حاصل ہوگی
کالا باغ ڈیم سمیت 11منصوبوں پر ابتدائی کام مکمل، 19727 میگا واٹ بجلی حاصل ہوگی

  

اسلام آباد (ویب ڈیسک) وزارت آبی وسائل کی جانب سے 19 ہزار 727 میگا واٹ کے گیارہ منصوبوں پر ابتدائی کام مکمل کرلیا گیا اور ان پر تعمیراتی کام جلد شروع کردیا جائے گا۔ کالا باغ ڈیم بھی تعمیر کیلئے تیار منصوبوں کی لسٹ میں بدستور شامل ہے، دستیاب دستاویز کے مطابق تیار منصوبوں میں دیا میر بھاشا ڈیم، مہمند ڈیم، بنجی ڈیم، تربیلا پانچ توسیعی منصوبہ شامل ہیں۔

روزنامہ ایکسپریس کی رپورٹ کے مطابق دیگر منصوبوں میں داسو سٹیج 2، بارپورہائیڈروپاورپراجیکٹ، لولانگ ڈیم، کالا باغ ڈیم، وارسک 2ری ہیبلائٹیشن اور چترال ہائیڈرو پاور پراجیکٹ کی توسیع شامل ہیں۔ دستاویز کے مطابق ان 11 منصوبوں سے 14.28 ملین ایکڑ فٹ پانی بھی دستیاب ہوگا جس سے ملک میں پانی کے ذخیرے میں خاطر خواہ حد تک اضافہ ہوگا۔ رپورٹ کے مطابق دیامیر بھاشا ڈیم سے نہ صرف 4500 میگاواٹ بجلی پیدا ہوگی بلکہ 6.4 ملین ایکڑ فٹ پانی کا ذخیرہ کیا جاسکے گا اور یہ منصوبہ نو سال میں پایہ تکمیل تک پہنچے گا۔ بنجی ہائیڈرو پاور پراجیکٹ سے 9سال میں 7100 میگاواٹ بجلی، تربیلا 5 توسیع منصوبے سے 5 سال میں 1410 میگاواٹ بجلی، کرم تنگی سے 4 سال بعد منصوبے کی تکمیل کی صورت میں 64.5 میگا واٹ بجلی دستیاب ہوگی۔

جرمنی کا بجلی کی کھپت پوری کرانے کیلئے صارفین کو پیسے دینے کا فیصلہ

واپڈا نے کالا باغ ڈیم کو بھی تعمیر کیلئے تیار منصوبوں میں شامل کیا ہوا ہے اور اس کی مدت تکمیل 6 سال ہے۔ اس منصوبے سے 3600 میگاواٹ بجلی دستیاب ہوگی اور پانی کا سٹوریج 6.1 ملین ایکڑ فٹ تک ہوگا۔ پاکستان پیپلزپارٹی کے سابقہ دور میں تین منصوبوںکی جانب سے اس کے خلاف قرارداد منظور کرنے پر اس منصوبے کو ختم کردیا گیا تھا۔ اس سلسلے میں ترجمان واپڈا نے بتایا کہ اس کی فزیبلٹی اور دیگر ساراہوم ورک مکمل ہے جب حکومت کی جانب سے ہدایات ملیں گی تو اس منصوبے پر بھی کام شروع کردیا جائے گا۔

مزید : اسلام آباد