جی آئی ڈی سی کیس :نظرثانی درخواستوں پر سماعت پیرتک ملتوی 

جی آئی ڈی سی کیس :نظرثانی درخواستوں پر سماعت پیرتک ملتوی 
جی آئی ڈی سی کیس :نظرثانی درخواستوں پر سماعت پیرتک ملتوی 

  

اسلام آباد (ڈیلی پاکستان آن لائن)جی آئی ڈی سی کیس میں نظرثانی درخواستوں پر سپریم کورٹ نے سماعت پیرتک ملتوی کردی۔

نجی ٹی وی دنیا نیوز کے مطابق جی آئی ڈی سی کیس میں نظرثانی درخواستوں پر سپریم کورٹ میں سماعت ہوئی،وکیل نجی کمپنیز نے کہاکہ حکومت اب تک 271 ارب جمع کر چکی ہے،تاپی اورزیرزمین گیس سٹوریج منصوبوں کے بعدحکومت کے پاس رقم بچ جائے گی،مخدوم علی خان نے کہاکہ حکومت چاہے توباقی رقم سے پاک ایران گیس منصوبہ شروع کرسکتی ہے،حکومت کامزید 456 ارب روپے جمع کرنے کا کوئی جواز نہیں ۔

جسٹس فیصل عرب نے کہاکہ گیس منصوبوں پرتاحال ایک روپیہ خرچ نہیں کیا گیا،حکومت نے صرف دفاتر بنانے پر ہی پیسہ خرچ کیا، جسٹس مشیر عالم نے کہاکہ حکومت کو مزید رقم وصول کرنے سے روک چکے ہیں،حکومت کو پہلے وصول کی گئی رقم خرچ کرنا ہوگی،جسٹس منصور علی شاہ نے کہاکہ حکومت کے سارے منصوبے ابھی ہوا میں ہی ہیں،وکیل عابد زبیری نے کہاکہ کئی صنعتوں نے گیس انفرااسٹرکچر سیس وصول ہی نہیں کیا،جس انڈسٹری نے سیس وصول ہی نہیں کیاوہ حکومت کواداکیسے کرے،استدعا ہے کہ عدالت کمیشن تشکیل دے جو وصولی کی تحقیقات کرے،جسٹس مشیر عالم نے کہاکہ حکم امتناع بھی عدالتی فیصلے کے ماتحت ہی ہوتا ہے،جسٹس فیصل عرب نے کہاکہ حکم امتناع لینے سے واجب الادا رقم ختم نہیں ہوتی،جسٹس مشیرعالم نے کہاکہ آئندہ سماعت پرکارروائی مکمل کریں گے، عدالت نے مزید سماعت پیرتک ملتوی کردی ۔

مزید :

قومی -علاقائی -اسلام آباد -