درگئی ملاکنڈ میں نامعلوم افراد کی فائرنگ،سرکاری سکول ٹیچر قتل 

  درگئی ملاکنڈ میں نامعلوم افراد کی فائرنگ،سرکاری سکول ٹیچر قتل 

  

سخاکوٹ(نمائندہ  پاکستان) درگئی ملاکنڈ میں نامعلوم افراد نے فائرنگ کرکے سرکاری سکول ٹیچر کو قتل کردیا۔ملزمان جائے وقوعہ سے فرار ہونے میں کامیاب ہوگئے۔ تفصیلات کے مطابق سرکاری سکول ٹیچر عبدالعزیز خان ولد معتبر ساکن مشکل آباد خارکئی درگئی رکشے میں اپنے گھر جارہے تھے۔جب وہ نیشنل بینک درگئی برانچ کے قریب پہنچے۔تو نامعلوم افراد نے ان پر فائرنگ شروع کی۔ جس کے نتیجے میں وہ شدید زخمی ہوگئے۔جنہیں زخمی حالت میں تحصیل ہیڈکوارٹر ہسپتال درگئی لے جانے کی کوشش کی گئی مگر وہ راستے میں دم توڑ گئے۔ ملزمان جائے واردات سے فرار ہونے میں کامیاب ہوگئے لیویز فورس کے جوانوں نے ملزموں کا تعاقب کرتے ہوئے ان پر فائرنگ بھی کی مگر وہ بچ نکلنے میں کامیاب ہوگئے۔ لیویز تھانہ درگئی نے نامعلوم ملزمان کے خلاف مقدمہ درج کرکے تفتیش شروع کردی۔ ادھر سرکاری سکول ٹیچر کے بہیمانہ قتل کے خلاف سکولوں کے اساتذہ، عوام اور تاجر برادری کے لوگ مذکورہ واقعہ کے خلاف سراپا احتجاج بن گئے۔ اور مقتول ٹیچر کی نعش درگئی کے مین چوک میں رکھ کر جی ٹی روڈ کو ہرقسم کی ٹریفک کیلئے بلاک کردیا جس سے گاڑیوں کی لمبی قطاریں بن گئیں۔مظاہرین انتظامیہ کے خلاف نعرے لگا رہے تھے۔مقتول کے وارثان نے کہا کہ دن دہاڑے سرکاری سکول کے ایک استاد کوبے گناہ قتل کرناملاکنڈ انتظامیہ کے منہ پر تماچہ ہے۔ مظاہرین سے مذاکرات کے لئے اے این پی ڈسٹرکٹ ملاکنڈ کے جنرل سیکرٹری محمدارشاد مہمند، اے ڈی سی انوار الحق، ایڈیشنل اے سی درگئی وحید اللہ خان اور صوبیدار میجر ملاکنڈ لیویز سمیع اللہ باچا نے ملزمان کی جلد از جلد از گرفتاری کی یقین دہانی کی جس پر مظاہرین نے احتجاج ختم کرکے روڈ کو ٹریفک کیلئے کھول دیا۔

مزید :

پشاورصفحہ آخر -