خواتین کھیلوں کے فروغ اور منشیات کے خاتمے کیلئے سنجیدگی سے کوشاں: کامران بنگش

خواتین کھیلوں کے فروغ اور منشیات کے خاتمے کیلئے سنجیدگی سے کوشاں: کامران ...

  

       پشاور(سٹاف رپورٹر)وزیراعلی کے معاون خصوصی برائے اطلاعات و اعلی تعلیم کامران خان بنگش نے کہا ہے کہ خیبرپختونخوا حکومت شعبہ تعلیم میں ہر سطح پر بالخصوص خواتین میں کھیلوں کے فروغ کیلئے پوری سنجیدگی سے کوشاں ہے کیونکہ کھیل صحت مند دل و دماغ کے ضامن اور توانا قوم کی آبیاری کرتے ہیں شہید بینظیر وومن یونیورسٹی پشاور میں 10ویں سالانہ سپورٹس میلہ کی اختتامی تقریب سے خطاب کرتے ہوئے انہوں نے اس بات کو خوش آئند قرار دیا کہ ہماری بہنیں اور بیٹیاں تعلیم کے ساتھ ساتھ سپورٹس کے میدان میں بھی بہت آگے ہیں وہ نہ صرف مسلسل کامیابیاں حاصل کر رہی ہیں بلکہ ملک و قوم کا نام بھی روشن کر رہی ہیں جن پر ہمیں بجا طور پر فخر ہے انہوں نے اعتراف کیا کہ جب بھی اپ ایسے کامیابیاں حاصل کرینگے تو مشکلات کا سامنا ضرور ہوگا مگر کامیابی اور جیت ہمیشہ محنت کی ہوتی ہے اسلئے مشکلات کا ڈٹ کر مقابلہ کرنا ہے کسی سے ڈرنا نہیں ہے کامران بنگش نے نوجوانوں میں منشیات کے بڑھتے ہوئے رجحان پر تشویش کا اظہار کرتے ہوئے کہا کہ ہم نے خیبرپختونخوا سے منشیات اور ڈرگ ایڈکشن کا خاتمہ کرنا ہے تو اس کیلئے سپورٹس کا فروغ بھی ضروری ہے انہوں نے کہا کہ سپورٹس ایکٹیوٹی کا مقصد ڈرگ ایڈکشن اور منشیات کے خلاف ایک جنگ ہے جس میں زندہ قومیں ہی سرخرو ہوتی ہیں نئے اقسام کے نشے اور منشیات تین سے چار مہینے میں انسان کو ختم کر دیتے ہیں نشئی انسان اتنا گنہگار نہیں جتنا زیادہ بیمار ہوتا ہے انہیں پیار کے ساتھ نشے سے منع کرنا ہے اور یہ حکومت اور معاشرے دونوں کی مشترکہ ذمہ داری ہے انہوں نے کہا کہ وفاقی اور صوبائی حکومتیں منشیات کی بیخ کنی کیلئے پوری تندہی سے اقدامات کر رہی ہے پشاور میں منشیات کی بڑی مقدار کی برآمدگی بھی اس کا ثبوت ہے کامران بنگش نے کہا کہ خیبرپختونخوا حکومت کی زیادہ توجہ سپورٹس پر ہے اور یہی وجہ ہے کہ خیبرپختونخوا دو مرتبہ سپورٹس میں چیمپیئن رہا ہے انہوں نے کہا کہ بارہ سو سے زیادہ کھلاڑیوں کو ہم ماہانہ وظیفہ دے رہے ہیں ہم نے خیبرپختونخوا ہاکی لیگ اور کرکٹ لیگ کا انعقاد کیا جس سے نیا ٹیلنٹ سامنے آئے گا کامران بنگش نے کہا کہ ہم نے بیٹے اور بیٹیوں کو ایک جیسی توجہ دینی ہے ہم نے ریڈ ریپن پر کام کرنا ہے اور منشیات اور ڈرگ ایڈک کا خاتمہ کرنا ہے انہوں نے کہا کہ پشاور میں دو بڑے سٹیڈیم بن رہے ہے اب اگلے پی ایس ایل میچ یہاں پر ہونگے ہمارے ہمسایہ برادر ملک افغانستان میں بھی کھیل فروغ پا رہے ہیں جس پر ہمیں خوشی ہے مگر ہمارا ٹارگٹ افغانستان نہیں ٹی ٹوینٹی ورلڈ کپ ہے بعد ازاں مہمان خصوصی کامران بنگش نے ٹورنامنٹ میں جیتنے والے گرلز کالجز کے فاتح کھلاڑیوں اور منتظمین میں ٹرافیاں اور شیلڈز تقسیم کئے۔ 

مزید :

صفحہ اول -