الیکشن کمیشن نے حقائق نامہ انتخابی اصلاحات کمیٹی کو پیش کر دیا

الیکشن کمیشن نے حقائق نامہ انتخابی اصلاحات کمیٹی کو پیش کر دیا
الیکشن کمیشن نے حقائق نامہ انتخابی اصلاحات کمیٹی کو پیش کر دیا

  

اسلام آباد (مانیٹرنگ ڈیسک) الیکشن کمیشن نے انتخابات 2013 ءسے متعلق اپنا حقائق نامہ انتخابی اصلاحات کمیٹی کو پیش کر دیا ہے، سیکرٹری الیکشن کمیشن اشتیاق احمد کا کہنا ہے کہ مجموعی طور پر 18 کروڑ بیلٹ پیپرز تھے جن میں سے 11 کروڑ 25 لاکھ بیلٹ پیپرز پاکستان پرنٹنگ کارپوریشن سے چھپوائے گئے۔ تفصیلات کے مطابق وفاقی وزیر خزانہ اسحاق ڈار کے زیر صدارت انتخابی اصلاحات کمیٹی کا اجلاس ہوا جس میں الیکشن کمیشن کے حکام سمیت دیگر افراد نے شرکت کی۔ ذرائع کے مطابق عوامی مسلم لیگ کے سربراہ شیخ رشید بھی اجلاس میں شریک ہوئے جبکہ سیکرٹری الیکشن کمیشن اشتیاق احمد نے کمیٹی کو الیکشن 2013 فیکٹ شیٹ پر بریفنگ دی۔ ان کا کہنا تھا کہ 2013ءکے انتخابات کو عالمی مبصرین نے تاریخ کے شفاف ترین انتخابات قرار دیا جبکہ عالمی انسانی حقوق کی تنظیموں، یورپی یونین کے مبصرین، امریکہ اور برطانیہ کے مبصرین نے بھی انتخابات کو شفاف قرار دیا۔ پلڈاٹ نے رپورٹ میں کہا کہ انتخابی عمل میں بہتری آئی ہے جس پر شیخ رشید نے سیکرٹری الیکشن کمیشن سے سوال کیا کہ کسی پاکستانی سیاسی جماعت کے رہنماءنے بھی انتخابات کو شفاف قرار دیا؟ اس موقع پر اسحاق ڈار نے مداخلت کرتے ہوئے کہا کہ سوالات کے جوابات بعد میں دیئے جائیں گے۔ اشتیاق احمد نے کمیٹی کو بتایا کہ انتخابات 2013ءکیلئے مجموعی طور پر 18 کروڑ بیلٹ پیپرز چھپوائے گئے جن میں سے 11 کروڑ 25 لاکھ بیلٹ پیپرز پاکستان پرنٹنگ کارپوریشن سے چھپوائے گئے تاہم اردو بازار کے کسی پرنٹنگ پریس پر بیلٹ پیپرز کی چھپوائی نہیں ہوئی، متعلقہ پرنٹنگ پریس نے الزام لگانے والوں کو قانونی نوٹس بھیجا ہے ۔

مزید : قومی /اہم خبریں