صوبائی حکومت سے ایک ایک پائی کا حساب لینگے :محمد ایوب

صوبائی حکومت سے ایک ایک پائی کا حساب لینگے :محمد ایوب

  

مٹہ (رحیم خان ) عوامی نیشنل پارٹی کے صوبائی نائب صدر محمد ایوب خان ضلعی نائب ناظم عبدالجبار خان اور بریگیڈئر (ر) ڈاکٹر محمد سلیم خان نے کہا ہے کہ صوبائی حکومت کے وقت ختم ہونے والے ہے حکومت سے ایک ایک پائی کا حساب کرینگے حکومت اور صوبائی وزیر ملازمین اور اے این پی کے کارکنان پر اتنا ظلم کریں جو کل خود برداشت کریں مٹہ خریڑئی سے اے این پی کے گڑھ بناکر دم لیں گے یہ تو شروعات ہے اگے اگے دیکھ ہوتا ہے کیا کلاس فور ملازمت کو سیاسی جھنڈا لگانے پر دینا سراسر زیادتی ہے اور انصاف کی نام پر ظلم کی انتہا ہے صوبے کی تمام وسائل بنی گالہ پر خرچ کرنا صوبے کی عوام کی حقوق پر داکہ ڈالنا ہے ہم ہر گز اجازت نہیں دینگے صوبائی حکومت کے تعلیمی ایکٹ کسی بھی صورت برداشت نہیں کرینگے صوبائی وزیر کو ڈرامہ بازی سے گریز کرنا چایئے ان خیالات کا اظہار انہوں نے مٹہ خریڑئی میں ایک بڑے شمولیتی جلسے سے خطاب کرتے ہوئے کیا جلسے سے ڈاکٹر طارق عزیز جنرل کونسلر شاہ جہان خان قاسیم خان عبدالجلا ل خان ایڈوکیٹ حسین علی خان حیدر علی شاہ ظفر علی ناز اور دیگر افراد نے بھی خطاب کیا جلسے میں مختلف سیاسی جماعتوں کے ڈاکٹر طارق عزیز جنرل کونسلر شاہ جہان خان عبدالغفار خان ایڈوکیٹ خکلے خان روح الاامین محمد صادق محمد حسین خان فرہاد علی انجینئر اشفاق اللہ اوردیگر خاندانوں نے اپنے سینکڑوں ساتھیوں سمیت عوامی نیشنل پارٹی میں شمولیت کا اعلان کیا جن کو پارٹی قائدین نے ٹوپیاں پہنا کر مبارکباد دی جلسے سے خطاب کرتے ہوئے مقررین نے کہا کہ سرکاری ملازمتوں کو پی ٹی ائی کے جھنڈا لگانے پر دینے والے صوبائی وزیر نے غریب عوام کیساتھ ظلم کی انتہاء کردی ہے اور سرکاری ملازمین کو صرف اس بات کئی بار تبدیل کرنا کہ اپ اپنے گھر پر حکومتی جماعت کا جھنڈا لگادیں انصاف نہیں بلکے انصاف کی نام پر انصاف کا جنازہ نکال دیا گیا انہوں نے کہا کہ عوام نے فیصلہ کیا ہے کہ وہ سونامی کو 2018 میں دفن کرکے باچاخانی کامیاب کرائیں گے انہوں نے کہا کہ صوبائی وزیر اور صوبائی حکومت مکمل طور پر ناکام ہونے کی بعد اب ان لوگوں نے سیاسی ڈار مہ بازی شروع کی ہے لیکن اب ان لوگوں کو یہ ڈرامے بہت مہنگے پڑئینگے انہوں نے کہا کہ اب صوبائی وزیر کا یہ کام رہ گیا ہے کہ وہ 25 کے وی ٹرانسفارمر لگا کر انکی افتتاح وہ کرتے ہیں جو شرم کی بات ہے انہوں نے کہا کہ 350 ڈیم بنانے والے حکومت نے ابھی تک تین ڈیم بھی نہیں بنائے جو انکے کارکردگی کامنہ بولتا ثبوت ہے اور جو ڈیم اے این پی حکومت نے منظور کرکے اس پر کام شروع ہوچکا تھا صوبائی حکومت نے انکو بھی بند کردی انہوں نے کہا کہ سیکشن فور لگانے سے گریز کرنا چایئے کیونکہ باچاخان بابا کے سپاہی کہی پر بھی زرعی زمینوں پر سیکشن فور نہیں لگنے دینگے انہوں نے کہا کہ جے یوائی کے طرف سے اے این پی کے لوگوں کے مسلمانی پر شک کرنا حیرانی کی بات ہے کیونکہ مولانا مفتی محمود تواے این پی کے قائدین کے پیش امام ہوتے تھے انہوں نے کہا کہ انہوں نے کبھی بھی جے یوائی کو اسطرح الفاظ سے یاد نہیں کی ہے جس طرح سمبٹ چم کے جلسے میں ایک مولانا نے اے این پی کے بارے میں تقریر کی انہوں نے ضلعی انتظامیہ سے مطالبہ کیا کہ وہ ضلع سوات میں باجری اور ریت پر لگائی گئی پابندی فوری طور پر ختم کریں

مزید :

پشاورصفحہ آخر -