مدارس پر غیر قانونی چھاپوں پر خاموش نہیں بیٹھیں گے ،مولانا گوہر شاہ

مدارس پر غیر قانونی چھاپوں پر خاموش نہیں بیٹھیں گے ،مولانا گوہر شاہ

  

چارسد ہ (بیورو رپورٹ) رکن قومی اسمبلی مولانا سیدگوہر شاہ نے کہا ہے کہ حکومت کی طرف سے تحریری خطبہ کسی صورت قبول نہیں۔مدارس پر غیر قانونی چھاپوں پر خاموش نہیں بیٹھے نگے ۔ لاؤڈ سپیکر پر درس قرآن پر بھارت میں پابندی نہیں مگر وطن عزیز میں پابندی لگائی جا رہی ہے ۔ تحریک انصاف علمائے کرام کو تنخواہوں کی لالچ دیکر اپنا ایجنڈہ پورا کرنے کے درپے ہیں ۔ وہ زمان خان کلے دوسہر ہ میں شمولیتی جلسہ سے خطاب کر رہے تھے ۔ اس موقع پر حاجی دانشمند ، مولانا جمیل احمد ، قاضی شاہد علی ، شیر خا ن ، روئیداد علی ، مولا نا ثناء اللہ اور دیگر بھی موجو د تھے ۔ اس موقع پر جان عالم خان ، میر عالم خان ، ماسٹر محمد ریاض ، فرمان علی ، سردار علی ، وہاب علی ، سید اکبر ، سلطا ن محمد ، ثمین جان ، نعیم خان ، مجاہد خان ، نوید علی، مظفر خان ، خان افضل ، ارشد علی ، لال محمد ، جاوید علی اور دیگر نے خاندان اور ساتھیوں سمیت جمعیت علمائے اسلام میں باقاعدہ شمولیت کا اعلان کیا ۔ شمولیتی جلسہ سے خطاب کر تے ہوئے مولانا سید گوہر شاہ نے حکومت کی طرف سے مساجد و مدارس میں لاؤڈ سپیکر کے استعمال پربے جاء پا بندی کو مسترد کرتے ہوئے کہا کہ حکومت کے منافقانہ طر ز عمل پر خاموش نہیں رہیں نگے ۔ صوبائی حکومت ایک طرف آئمہ کرام کو تنخواہ دینے کی بات کر تی ہے جبکہ دوسری طرف درس قرآن و حدیث پر پابندی لگا رہی ہے ۔ پڑوسی ملک بھارت میں درس قرآن پر پابندی نہیں مگر وطن عزیز میں نیشنل ایکشن پلان کے آڑ میں بیرونی ایجنڈے کی تکمیل کیلئے راہ ہموار کی جا رہی ہے ۔ انہوں نے کہاکہ قانون کی نظر میں سب برابر ہے مگردیکھا جائے تو حکومت چوکوں ، چوراہوں اور شادی ہالوں میں دن رات لاؤڈ سپیکر کے استعمال پر گونگی بہری نظر آتی ہے مگر علمائے کرام اور دینی حلقوں کو پریشان کرنے کیلئے آئے روز مساجد اور مدارس پر بے جا چھاپے لگائے جا رہے ہیں جس پر جمعیت علمائے اسلام کسی صورت خاموش نہیں بیٹھ سکتی ۔ انہوں نے بر ما مسلمانوں پر ڈھائے جانے والے مظالم کی بھی شدید مذمت کی اور مسلم امہ سے اس حوالے سے متفقہ لائحہ عمل اختیار کرنے پر زور دیا ۔

مزید :

پشاورصفحہ آخر -