مری ایکسپریس وے پر این ایچ اے باڑ نہیں لگارہی،اے سی عارف اللہ

مری ایکسپریس وے پر این ایچ اے باڑ نہیں لگارہی،اے سی عارف اللہ

  

مری(محبو ب لو ن سے)اسسٹنٹ کمشنر مری و ایڈمنسٹریٹر میونسپل کاپوریشن مری عارف اللہ خان نے کہا ہے کہ ایکسپریس وے مری پراین ایچ اے کو بارہا ا زبانی اورتحریری طور پر آگاہ کیا جاتا رہا کہ حفاظتی باڑ لگائی جائے تاکہ مقامی اور غیر مقامی لوگ غیر قانونی تعمیرات نہ کرسکیں لیکن ابھی تک این ایچ اے نے حفاظتی باڑ نہیں لگائی اور نہ غیر قانونی تعمیرات اور تجاوزات کو روکنے اورختم کرنے میں نیشنل ہائی وے کے ذمہ داران کے عدم تعاون سے ایساممکن نہ ہوسکا انہوں نے کہاکہ ایکسپریس وے پر غیر قانونی ہاؤسنگ سوسائٹیوں سمیت مقامی اور غیر مقامی افراد کی غیر قانونی تعمیرات کو گرانے کیلئے میونسپل کارپوریشن کے اہلکار جاتے ہیں لیکن این ایچ اے کا تعاون نہ ہونے سے کامیابی حاصل نہیں ہوسکی اسسٹنٹ کمشنر مری نے اس سلسلہ میں پروجیکٹ ڈائریکٹر آئی یم ڈی سی ڈبلیو بھارہ کہوکو تحریری طور پر آگاہ کردیا ہے اوراعلیٰ حکام کو بھی اس سلسلہ میں آگاہ کردیا ہے ،انہوں نے بتایا کی ڈنہ کے پاس ایکسپریس وے پر افضال خورشید ولد خورشید عباسی نے غیر قانونی تعمیرات کی جس پر بلڈنگ انسپکٹر نے اس کو نوٹس جاری کیا اور تھانہ مری میں ایف آئی آر بھی درج کراوائی گئی انہوں نے این ایچ اے بھارہ کہوکو اان تجاوزات کو فوری ہٹانے کا بھی کہا اسکے علاوہ برائٹ مائننگ پروجیکٹ جو کہ موضع مانگا اور ساملی بہرہ مال ،کھجٹ سے بوستال موڑ کو ہر قسم کی تجاوزات اور تعمیرات کیلئے 1828 میٹر تک پروجیکٹ سے ممنوع علاقہ قرار دیا گیا ہے وہاں بھی غیر قانونی تعمیرات کا سلسلہ جاری ہے جن کو فوری طور پر روکاجانا ضروری ہے مثال کے طور پر ناصر جنجوعہ،مسٹر ظہراب ساملی ،کورنگ ویو ہوٹل پھری کے پاس مسجد جو کامران بنوا رہا ہے ،بابو لاہور ہوٹل ناصر نزد بوستال موڑغیر قانونی تعمیرات ایکسپریس وے پر کررہے ہیں میونسپل کارپوریشن مری نے بارہا ان کو آگاہ کیا کہ بی ایم پی کی ہدایت کے مطابق وزارت دفاع سے این او سی حاصل کریں اے سی مری نے اتھارٹی کو کہا ہے کہ ایکسپریس وے پرممنوعہ علاقہ میں تجاوزات اور غیر قانونی تعمیرات کوروکنے کے فوری اقدامات کئے جائیں ۔دریں اثناء جنگلات کی اراضی پر قبضہ اور غیر قانونی ہاؤسنگ سوسائٹیوں کیخلاف ایکشن کیلئے تمام دستاویزات سپریم کورٹ میں جمع کرادی گئی محکمہ جنگلات ،میونسپل کارپوریشن مری اور محکمہ مال سمیت تمام متعلقہ اداروں کی طرف سے تفصیلی رپورٹ جمع کرائے جانے کے بعد اس سپریم کورٹ بہت جلد اس سلسلے میں اپنا فیصلہ دیگی گرین مری ایسوسی ایشن نے اس سلسلے میں ابتک کی کاروئی اور رپورٹس پر اطمینان کا اظہار کرتے ہوئے اس امید کا اظہار کیا ہے کہ سپریم کورٹ مری کے حسن کو بچانے اورسرکاری اراضی کو قبضہ مافیاء سے واگزار کرانے کیلئے سخت حکم دیگی۔

مزید :

راولپنڈی صفحہ آخر -