پاکستان عالمی اور علاقائی رہنماﺅں سے رابطوں کا سلسلہ جاری رکھے گا:قومی سلامتی کمیٹی

پاکستان عالمی اور علاقائی رہنماﺅں سے رابطوں کا سلسلہ جاری رکھے گا:قومی ...
پاکستان عالمی اور علاقائی رہنماﺅں سے رابطوں کا سلسلہ جاری رکھے گا:قومی سلامتی کمیٹی

  

اسلام آباد (ڈیلی پاکستان آن لائن)قومی سلامتی کمیٹی نے کہا ہے کہ ملکی دفاع ناقابل تسخیر ہے، بیرونی جارحیت کیخلاف ملک کوہرممکن حدتک مضبوط بنایاجائے گا، بھارت لائن آف کنڑول پر نہتے شہریوں کو نشانہ بنار ہا ہے جو کہ ناقابل برداشت ہے، محفوظ اور پر امن افغانستا ن پاکستان کے مفاد میں ہے ، افغانستان میں دیرپا اور پائیدار امن مذاکرات کے ذریعے سے ہی ممکن ہے، وزیر خارجہ نے عالمی رہنماﺅں کو خطے میں سیکورٹی چیلنجز سے متعلق پاکستان کے مئوقف سے آگاہ کیا ، پاکستان عالمی اور علاقائی رہنماﺅں سے رابطے کا سلسلہ جاری رکھے گا۔

تفصیلات کے مطابق وزیراعظم شاہد خاقان عباسی کی زیر صدارت قومی سلامتی کمیٹی کا اجلاس منعقد ہوا۔ اجلاس میں وزیر خزانہ اسحاق ڈار، وزیر خارجہ خواجہ محمد آصف، چیئرمین جوائنٹ چیفس آف سٹاف کمیٹی، تینوں مسلح افواج کے سربراہان، ڈی جی آئی ایس آئی اور دیگر سینئر سول و عسکری حکام نے شرکت کی۔اجلاس میں کمیٹی کووزیراعظم کے دورہ امریکااوراقوام متحدہ کی سرگرمیوں پربریفنگ دی گئی جبکہ کمیٹی کووزیرخارجہ کے دورہ چین،ایران اورترکی سے بھی آگاہ کیاگیا۔ اجلاس کے دوران وزیر اعظم نے کمیٹی کو بتایا کہ اقوام متحدہ کے اجلاس کے موقع پر وزیراعظم ، وزیر خارجہ کی دیگر ممالک کے اہم رہنماو¿ں سے ملاقاتیں ہوئیں جبکہ سیکریٹری جنرل اقوام متحدہ کوبھارتی فائرنگ ،مقبوضہ کشمیرمیں تشددپرڈوزیئردیا۔ وزیر اعظم نے عالمی رہنماﺅں کو مسئلہ کشمیر، افغان امن عمل اور دہشت گردی کے خلاف جنگ میں پاکستان کے کردار پر بریفنگ دی جبکہ وزیر خارجہ نے مختلف ممالک کے دورے کے دوران پاکستان کے مﺅقف سے بین الاقوامی رہنماﺅں کو آگاہ کیا۔قومی سلامتی کمیٹی کا اجلاس چار گھنٹے تک جاری رہا جس کے اختتام پر اعلامیہ جاری کردیا گیا ہے ۔

عمران خان ، خورشید شاہ، اسحاق ڈار سمیت588ممبران وفاقی و صوبائی اسمبلی نے اثاثوں کی تفصیلات جمع نہیں کرائی: الیکشن کمیشن

وزیر اعظم پاکستان کی زیر صدارت قومی سلامتی کمیٹی کے اجلاس کے حوالے سے جاری اعلامیے میں کہا گیا ہے کہ بھارتی فوج نہتے کشمیریوں پربہیمانہ طاقت کا استعمال کررہی ہے، اجلاس میں بھارت کی مقبوضہ کشمیرمیں انسانی حقوق کی پامالیوں کی مذمت کی گئی، کمیٹی کا کہنا تھا کہ ایل او سی پر بارباربھارتی شیلنگ سے معصوم جانوں کاضیاع ہورہاہے جس پر کمیٹی نے گہری تشویش کا اظہارکا اظہار کیا ۔قومی سلامتی کمیٹی نے افغانستان سے تعلقات میں حالیہ پیشرفت کابھی جائزہ لیا گیا اور اجلاس میں کمیٹی کوبارڈرمینجمنٹ اورمہاجرین کی واپسی سے متعلق آگاہ بھی کیا گیا۔

مزید :

قومی -اہم خبریں -