ایران میں حجاب مخالف مظاہرے کے دوران بالوں کا جوڑا بنانے والی لڑکی کو گولی مار کر قتل کردیا گیا

ایران میں حجاب مخالف مظاہرے کے دوران بالوں کا جوڑا بنانے والی لڑکی کو گولی ...
ایران میں حجاب مخالف مظاہرے کے دوران بالوں کا جوڑا بنانے والی لڑکی کو گولی مار کر قتل کردیا گیا
سورس: Twitter/Screengrab

  

تہران(مانیٹرنگ ڈیسک) ایران میں حجاب مخالف احتجاجی مظاہرے میں اپنے کھلے بالوں کا جوڑا بنانے والی لڑکی حدیث نجفی کو گولی مار کر قتل کر دیا گیا۔ "انڈیا ٹائمز "کے مطابق 20سالہ حدیث نجفی حالیہ دنوں پولیس کی زیرحراست قتل ہونے والی 22سالہ کرد لڑکی مہسا امینی کی موت کے بعد شروع ہونے والے احتجاجی مظاہروں میں شریک تھی جہاں اس نے دیگر کئی خواتین کی طرح سر پر سکارف نہیں لے رکھا تھا۔ 

مظاہرے کے دوران حدیث نجفی کے بال کھل گئے جنہیں وہ منظرعام پر آنے والی ویڈیو میں سمیٹتی ہوئی نظر آتی ہے۔اس ویڈیو کے وائرل ہونے کے اگلے دن ہی حدیث نجفی کو گولی مار دی گئی۔ حدیث نجفی کی موت کی خبر ٹوئٹر ہینڈل @AlinejadMasihسے ایک ٹویٹ کے ذریعے دی گئی ہے۔ اس ٹویٹ میں بتایا گیا ہے کہ حدیث نجفی مہسا امینی کی موت کے حوالے سے احتجاج میں شرکت کے لیے تیاری کر رہی تھی جب اسے گولیاں مار دی گئیں۔

ٹویٹ میں بتایا گیا ہے کہ حدیث نجفی کو سیکیورٹی فورسز کی طرف سے 6گولیاں ماری گئیں جو اس کے سینے، چہرے اور گردن پر لگیں۔واضح رہے کہ 22سالہ مہسا امینی کو بھی حجاب کی پابندی کی خلاف ورزی پر گرفتار کیا گیا تھا اور دوران حراست ہی اس کی موت واقع ہو گئی تھی جس کے بعد سے ملک گیر احتجاج جاری ہے۔ اس دوران پرتشدد کارروائیوں میں اب تک 60سے زائد لوگ موت کے منہ میں جا چکے ہیں۔

مزید :

بین الاقوامی -