جاری مالی سال کے دوران زرعی قرضوں کے اجراءمیں 10.7 فیصد اضافہ

جاری مالی سال کے دوران زرعی قرضوں کے اجراءمیں 10.7 فیصد اضافہ

  



اسلام آباد (اے پی پی) گذشتہ مالی سال کے مقابلہ میں جاری مالی سال کے دوران زرعی قرضوں کے اجراءمیں 10.7 فیصد اضافہ ہوا ۔ سٹیٹ بینک آف پاکستان (ایس بی پی ) کی رپورٹ کے مطابق رواں مالی سال میں جولائی 2013ءتا مارچ 2014ءنو مہینوں کے دوران مختلف بینکوں کی طرف سے زرعی قرضوں کی مد میں 255 ارب 70 کروڑ روپے جاری کئے گئے جبکہ گذشتہ مالی سال کے اسی عرصہ کے دوران231ارب روپے کے زرعی قرضے جاری کئے گئے تھے۔ رپورٹ کے مطابق رواں مالی سال کےلئے زرعی قرضوں کےلئے 380 ارب روپے کا ہدف مقرر کیا گیا تھا اور مالی سال کے پہلے نو مہینوں کے دوران67.3 فیصد کا ہدف حاصل کرلیا گیا ۔ سٹیٹ بینک کے اعدادوشمار کے مطابق رواں مالی سال کے دوران گذشتہ سال کی نسبت واجب الادا زرعی قرضوں کی شرح میں16 فیصد یعنی 39 ارب 10 کروڑ روپے کا اضافہ ریکارڈ کیا گیا ۔ گذشتہ مالی سال کے پہلے نو ماہ کے دوران زرعی شعبہ کے واجب الادا قرضوں کا حجم 241 ارب 90 کروڑ روپے تھا جو جاری مالی سال میں بڑھ کر281 ارب روپے تک پہنچ گیا ہے ۔ ایس بی پی کے اعدادوشمار کے مطابق زرعی قرضوں کے ہدف کا تقریباً71 فیصد یعنی 133ارب 50 کروڑ روپے پانچ بڑے بینکوں کی طرف سے پورا کیا گیا ہے جو گذشتہ سال کے مقابلہ میں 8 فیصد زائد ہے۔ گذشتہ سال کے اسی عرصہ کے دوران پانچ بڑے بینکوں کی طرف سے 123 ارب 70 کروڑ روپے کے زرعی قرضے جاری کئے گئے تھے۔ سٹیٹ بینک کی رپورٹ کے مطابق ملک کے بڑے کمرشل بینکوں میں مسلم کمرشل بینک نے اپنے ہدف کا 76.7 فیصد ، نیشنل بینک آف پاکستان نے 76.2 فیصد، حبیب بینک لمیٹڈ نے 73فیصد، یونائیٹڈ بینک لمیٹڈ نے 63.2 فیصد اور الائیڈ بینک لمیٹڈ نے 56.7 فیصد کا ہدف حاصل کرلیا ہے ۔

جبکہ زرعی ترقیاتی بینک نے اپنے ہدف کا 66 فیصد حاصل کیا اور مالی سال کے پہلے نو ماہ کے دوران 45 ارب 90 کروڑ روپے کے قرضے جاری کئے ۔ جاری مالی سال کےلئے زرعی ترقیاتی بینک کا زرعی قرضوں کا ہدف 69 ارب 50 کروڑ روپے مقرر کیا گیا تھا۔ اسی طرح 14 مقامی بینکوں نے بھی رواں مالی سال کےلئے زرعی قرضہ جات کے اجراءکے اپنے ہدف کے 60 فیصد کے مساوی قرضے جاری کئے ہیں۔

مزید : کامرس