گرمیوں کے آغاز میں بجلی کی شدید ترین لوڈشیڈنگ پریشان کن ہے

گرمیوں کے آغاز میں بجلی کی شدید ترین لوڈشیڈنگ پریشان کن ہے

  



راولپنڈی(کامرس ڈیسک)راولپنڈی چیمبر آف کامرس اینڈ انڈسٹری کے صدر ڈاکٹر شمائل داﺅد آرائیں نے کہا ہے کہ گرمیوں کے آغاز میں بجلی کی شدید ترین لوڈشیڈنگ پریشان کن ہے ابھی سے شہروں میں 10سے 12گھنٹے اور دیہی علاقوں میں 15سے 20گھنٹے کی لوڈشیڈنگ عوام کے لئے عذاب سے کم نہیں ، وزیر اعظم مختصر مدت میں بجلی کے بحران پر قابو پانے لئے دو مرتبہ متعلقہ کمیٹی کاا جلاس بُلا چکے ہیں لیکن صورتحال میں بہتری نہیں آ سکی اورمجوعی طور پر بھی کاروباری سرگرمیاں متاثر ہوئی ہیں ۔حکومت اس حوالے سے جلد ہی کوئی حکمت عملی وضع کرے اور مسئلے کے فوری حل کےلئے عملی اقدامات اٹھائے،اس حوالے سے فی الفور انرجی مکس کو بہتر بنایا جائے اور ایران سے بجلی کی درآمد کے منصوبے کی جلد تکمیل کے ساتھ ساتھ ملک میں توانائی کے جاری منصوبے جن پر وزیر اعظم خود افتتاح کر چکے ہیں کو جلد از جلد مکمل کیا جائے تا کہ حالات کو سنبھالا جا سکے۔ان خیالات کا اظہا ر انہوں نے چیمبر میں تاجروں و صنعتکاروں کے ساتھ ایک ملاقات میں کیا اس موقع پر سینئر نائب صدر ملک شاہد سلیم ،سابق صدور اور دیگر اراکین چیمبر بھی موجو دتھے۔ڈاکٹر شمائل داﺅد نے کہا کہ حکومت کو متبادل توانائی کے منصوبوں پر کام کرنا چاہیئے اورا ن شعبوں میں بیرونی سرمایہ کاروں کو سہولیات فراہم کرے اور ٹیکس فری سرمایہ کاری کو فروغ دے تا کہ بیرونی کمپنیاں اور مقامی سرمایہ کار متبادل توانائی کے منصوبوں میں انوسٹ کریں جس سے ملکی خزانے میں بہتری کے ساتھ ساتھ توانائی بحران پر بھی قابو پانے میں مدد ملے گی

، انہوں نے کہا کہ ونڈ پاور اور شمسی توانائی سے بجلی پیدا کرنے کےلئے مقامی فضاءنہایت سازگار ہے۔ صدر چیمبر نے تجویز دیتے ہوئے کہا کہ جن علاقوں میں بجلی چوری زیادہ ہے وہاں لودشیڈنگ بھی بڑھائی جائے اور بجلی چوروں کو خواہ وہ ملک کے کسی بھی کونے میں ہوں کو قانون کے کٹہرے میں لا یا جائے اور سخت سے سخت سزا دی جا ئے ،انہوں نے خاص طور پر راولپنڈی میں شدید تر ہوتی لوڈشیڈنگ کے حوالے سے اظہارِ خیال کرتے ہوئے کہا کہ خطے میں غیر اعلانیہ لوڈشیڈنگ سے کاروبار تباہ ہو رہے ہیں اور عوام کو مشکلات کا سامنا ہے ۔ انہوں نے کہا کہ کاروباری طبقہ ملکی معاشی ترقی میں اہم کر دار کرتا ہے موجودہ حالات میں کاروباری سرگرمیوں کا فروغ ناممکن ہے۔ انہوںنے مطالبہ کرتے ہوئے کہاکہ توانائی بحران اور خاص طور پر بجلی کے بحران پر نہ صرف قابو پایاجائے بلکہ قیمتوں کو بھی کم کیا جائے۔

مزید : کامرس